کورونا وائرس، خام تیل کی قیمتوں میں کمی سے پہنچنے والے معاشی نقصان کو سعودی عرب نے شہریوں سے ’ وصول ‘ کرنے کا فیصلہ کر لیا

کورونا وائرس، خام تیل کی قیمتوں میں کمی سے پہنچنے والے معاشی نقصان کو سعودی ...
کورونا وائرس، خام تیل کی قیمتوں میں کمی سے پہنچنے والے معاشی نقصان کو سعودی عرب نے شہریوں سے ’ وصول ‘ کرنے کا فیصلہ کر لیا

  

ریاض (ڈیلی پاکستان آن لائن)سعودی عرب نے کورونا وائرس کے پیش نظر معیشت کی بحالی کیلئے ” ویلیو ایڈڈ ٹیکس “ (وی اے ٹی ) میں تین گنا اضافہ کرنے کا فیصلہ کر لیاہے جبکہ اس کے علاوہ شہریوں کو ملنے والے رہائشی الاﺅنس کو بھی معطل کرنے کا سخت فیصلہ کیا ہے ۔

تفصیلات کے مطابق سعودی عر ب نے معیشت کا خام تیل کی عالمی منڈیوں میں انحصار کم کرنے کیلئے دو سال قبل ویلیوایڈڈ ٹیکس متعارف کروایا تھا تاہم اب کورونا وائرس کے پیش نظر یکم جولائی سے ویلیو ایڈڈ ٹیکس پانچ فیصد سے بڑھا کر 15 فیصد کرنے کا فیصلہ کر لیاہے ۔ اس کے علاوہ سعودی حکومت نے یکم جون سے رہائشی الاﺅنس بھی معطل کرنے کا فیصلہ کیاہے ، اس ہنگامی منصوبے سے 26.6 ارب ڈالر کا فائدہ پہنچے گا ۔

کورونا وائرس اور بین الاقوامی منڈیوں میں تیل کی طلب او ر قیمتیں کم ہونے کے باعث سعودی عرب کی آمدن میں کمی ہوئی ہے ، سعودی عرب کا تیل برآمد کرنے والے بڑے ممالک میں کیا جاتاہے۔وزیر خارجہ محمد الجدان نے اپنے ایک بیان میں کہاہے کہ یہ اقدامات تکلیف دہ ہیں لیکن ضروری اس لیے ہیں تاکہ درمیانے اور لمبے عرصے کیلئے مالی اور معاشی استحکام حاصل کیا جا سکے اور کورونا وائرس کے بحران پر کم سے کم نقصان کے ساتھ قابو پایا جا سکے ۔

انہوں نے یہ بھی واضح کیا کہ حکومت کی کفایت شعاری مہم کے تحت کچھ اداروں کے اخراجات کو معطل یا ملتوی کیا جارہاہے جبکہ ویژن 2030 کے اصلاحاتی پروگرام کے منصوبے کے اخراجات بھی کم کیے گئے ہیں ۔یہ اعلان اس وقت سامنے آیا ہے کہ جب ملک میں اخراجات آمدن سے زیادہ ہوچکے ہیں۔ رواں سال کے پہلے تین ماہ کے دوران سعودی عرب میں بجٹ کا خسارہ نو ارب ڈالر رہا۔

یہ تب ہوا جب گذشتہ سال اسی دورانیے کے مقابلے رواں سال تیل سے ہونے والی آمدن تقریباً ایک تہائی رہ گئی اور اس میں 34 ارب ڈالر کا فرق دیکھا گیا۔ اس کی وجہ سے کل آمدن میں 22 فیصد کمی واقع ہوئی۔خیال ہے کہ کورونا وائرس کی روک تھام اور اس سے مقابلے کے لیے کیے جانے والے اقدامات کی وجہ سے سعودی شہزادے محمد بن سلمان کی جانب سے متعارف کردہ معاشی اصلاحات کی رفتار اور وسعت پر اثر پڑے گا۔

مزید :

اہم خبریں -عرب دنیا -