کورونا وائرس سے پہلے بھارت ڈاکٹروں کے لیے کتنی حفاظتی کٹس بناتا تھا اور اب کتنی بناتا ہے؟ جان کر پاکستانی حکومت سوچے گی موقع ضائع ہوگیا

کورونا وائرس سے پہلے بھارت ڈاکٹروں کے لیے کتنی حفاظتی کٹس بناتا تھا اور اب ...
کورونا وائرس سے پہلے بھارت ڈاکٹروں کے لیے کتنی حفاظتی کٹس بناتا تھا اور اب کتنی بناتا ہے؟ جان کر پاکستانی حکومت سوچے گی موقع ضائع ہوگیا

  

نئی دہلی(مانیٹرنگ ڈیسک) بھارت میں کورونا وائرس سے بچاﺅ کی حفاظتی کٹس بنانے کی شرح میں کئی سو گنا اضافہ ہو گیا۔ ٹربیون انڈیا کے مطابق کورونا وائرس سے قبل بھارت میں سالانہ 47ہزار حفاظتی کٹس بنائی جا رہی تھیں اور اب یومیہ 2لاکھ کٹس بنائی جا رہی ہیں اور بھارت اس شر سے خیر یوں برآمد کر رہا ہے کہ ان کٹس کی فروخت سے خاطرخواہ زرمبادلہ کما رہا ہے۔

رپورٹ کے مطابق بھارت کے سیکرٹری ڈیفنس ریسرچ اینڈ ڈویلپمنٹ ڈاکٹر جی ستیش ریڈی کا کہنا تھا کہ ”کورونا وائرس تباہ کاری کے ساتھ کئی مواقع بھی لے کر آیا ہے جن سے ریسرچ، ڈویلپمنٹ اور صنعتی پیداوار کے شعبے فائدہ اٹھا سکتے ہیں۔ تاہم ان شعبوں سے متعلق لوگوں کو ذہن میں رکھنا چاہیے کہ پیداوار بڑھانے میں تاخیر کرنے پر اس کا کوئی فائدہ نہیں ہو گا۔ حفاظتی کٹس کے معاملے میں ہم نے اس موقع سے بھرپور فائدہ اٹھایا ہے اور اب ہم 2لاکھ کٹس یومیہ تیار کر رہے ہیں۔ اسی طرح وینٹی لیٹرز کی پیداوار میں بھی کئی گنا اضافہ ہوا ہے۔“

مزید :

بین الاقوامی -