”کورونا کی وباآئی تو ہم نے وزیر اعظم کو تعاون کی پیشکش کی لیکن۔۔۔“ قومی اسمبلی میں بلاول بھٹو کا وزیراعظم سے گلہ

”کورونا کی وباآئی تو ہم نے وزیر اعظم کو تعاون کی پیشکش کی لیکن۔۔۔“ قومی ...
”کورونا کی وباآئی تو ہم نے وزیر اعظم کو تعاون کی پیشکش کی لیکن۔۔۔“ قومی اسمبلی میں بلاول بھٹو کا وزیراعظم سے گلہ

  

اسلام آباد(ڈیلی پاکستان آن لائن ) چیئرمین پیپلزپارٹی بلاول بھٹو زرداری نے کہا ہے کہ جب پاکستان میں کورونا کی وبا آئی تو ہم نے وزیراعظم کوتعاون کی پیشکش کی مگر اس کےبدلےمیں وزیراعلیٰ مرادعلی شاہ اور سندھ کےلوگوں کی کردارکشی شروع کر دی گئی،انہوں نے کہا کہ یہ وقت سیاست کا نہیں ملک بہت مشکلات میں گھرا ہوا ہے، ہمیں ہیلتھ سسٹم اورمعیشت کی بہتری کے لیے کام کرنا ہے۔قومی اسمبلی کے اجلاس میں اظہار خیال کرتے ہوئے ان کا کہنا تھا کہ وزیراعظم اس ملک کے وزیرصحت بھی ہیں لیکن وہ آج اسمبلی میں موجود نہیں،ان کی ذمہ داری ہے کہ قوم کو کورونا پر بریف کریں۔بلاول بھٹو کا کہنا تھا کہ آج ایک بار پھرقومی یکجہتی کی ضرورت ہے،وزیراعظم عمران خان صرف پی ٹی آئی کےنہیں بلکہ پورےملک کے وزیراعظم ہیں۔

انہوں نے کہا کہ وزیرخارجہ نے اپنی تقریر میں سندھ اور18ویں ترمیم کونشانہ بنایا،مانتےہیں اس ترمیم کےبعد صوبوں کو زیادہ وسائل ملے مگر صوبوں کا موجودہ بجٹ صحت کے شعبے کے لیے کافی نہیں ہے۔ان کا کہنا تھا کہ مانتاہوں ٹیسٹنگ صلاحیت میں خطے کے مقابلے میں پاکستان کے اندر اضافہ ہوا ہے اور اس کا کریڈیٹ صوبوں بالخصوص سندھ کوجاتا ہے۔چیئرمین پیپلز پارٹی نے کہا کہ سندھ اورخیبرپختونخوا نے ٹیسٹنگ صلاحیت بڑھانے کے لیے صوبائی وسائل استعمال کیے، خیبرپختونخوا کے وزیرصحت اور دیگرعملے نے بہت محنت کی جس پر سلام پیش کرتا ہوں۔بلاول بھٹو نے کہا کہ کیا وزیراعظم یہ کہہ سکتے ہیں کہ جنگ کا مقابلہ خود کرو ہم آپ کوہتھیار نہیں دیں گے؟۔انہوں نے کہا کہ جتنے بیانات ہم ایک دوسرے کے خلاف دیتے ہیں اس کو کورونا وائرس کی آگاہی کے لیے دیں تو فائدہ ہوگا۔

مزید :

قومی -