بھارت میں کورونا سے مزید تین ہزار880افراد ہلاک، تین لاکھ 29 ہزار نئے کیسز رپورٹ

بھارت میں کورونا سے مزید تین ہزار880افراد ہلاک، تین لاکھ 29 ہزار نئے کیسز رپورٹ
بھارت میں کورونا سے مزید تین ہزار880افراد ہلاک، تین لاکھ 29 ہزار نئے کیسز رپورٹ

  

نئی دلی ( ویب ڈیسک ) بھات میں کورونا کا قہر جاری ہے جہاں ایک روز میں مزید تین ہزار 880 افراد موت کی بھینٹ چڑھ گئے جبکہ تین لاکھ 29ہزار کیسز  رپورٹ ہوئے ۔

بھارت میں صحت کا نظام پہلے ہی درہم برہم ہے ، ایسے میں مزید تین لاکھ 29ہزار سے زائد کیسز سامنے آگئے جبکہ تین ہزار 879 افراد کی ہلاکت کے بعد کورونا سے مرنے والوں کی مجموعی تعداد ڈھائی لاکھ سے تجاوز کر گئی۔تامل ناڈو، راجستھان اور پوڈو چری میں دو ہفتوں کا لاک ڈاؤن لگا دیا گیا ہے۔ بھارتی میڈیا کے مطابق مودی حکومت پر قومی لاک ڈاؤن کے لیے دباؤ بڑھ گیا ہے۔

دوسری جانب بھارت میں شمشان گھاٹ کم پڑنے پر کورونا سے مرنے والوں کی لاشیں دریا گنگا میں بہا دی گئیں ، لاشیں دریا سے برآمد ہونے پر علاقے میں خوف و ہراس پھیل گیا، ریاست بہار میں 40 سے زائد لاشیں تیرتی ہوئی دریائے گنگا کے کنارے پر پہنچ گئیں، جنہیں اتر پردیش سے دریا میں ڈالا گیا تھا۔

حکام کا کہنا ہے کہ یہ ان کورونا مریضوں کی لاشیں ہیں جنہیں شمشان گھاٹ میں جگہ نہ ملنے پر لواحقین نے دریا میں ڈال دیا تھا۔ حکام کو خدشہ ہے کہ لاشوں کی تعداد سو سے زیادہ ہوسکتی ہے۔

دوسری جانب ورلڈ ہیلتھ آرگنائزیشن ( ڈبلیو ایچ او) نے خبردار کیا کہ بھارت میں تباہی پھیلانے والے کورونا کی نئی قسم پوری دنیا کیلئے خطرہ ہے ، ہر ملک کو اس نئی قسم کے وائرس سے بچاؤ کیلئے سخت اقدامات اٹھانا ہوں گے ، بروقت اسے محدود نہ کیا گیا تو نقصان بہت زیادہ بڑھ جائے گا۔بھارت میں پائی جانیوالی کورونا کی قسم کو بی 1617کا نام دیا گیا ہے جبکہ اسے دنیا بھر کیلئے خطرہ قرار دیاگیا ہے ۔بتایا گیا ہے کہ اس نئی قسم کے کورونا نے نظام صحت تباہ کر دیا ہے ،اگر یہ وائرس دنیا بھر میں پھیل گیا تو نقصان کا اندازہ لگانا مشکل ہے ۔

مزید :

کورونا وائرس -