جیلیں بیماریوں کا گڑھ، سینکڑوں قیدی ایڈز، ہیپاٹائٹس جیسے موذی مرض کا شکار 

جیلیں بیماریوں کا گڑھ، سینکڑوں قیدی ایڈز، ہیپاٹائٹس جیسے موذی مرض کا شکار 

  

 لاہور(رپورٹ: یونس باٹھ) جیل میں مریضوں کی عمومی حالت تو ویسے ہی کچھ اچھی نہیں ہوتی تاہم دیکھا گیا ہے کہ جیلوں میں موسم کی شدت سے بچنے کے لیے کوئی مناسب انتظامات بھی نہیں ہوتے،پنجاب کی جیلوں میں قید یوں کو دی جانیوالی صحت کی سہولتوں کا فقدان ہے جس کے باعث قیدی مختلف بیماریوں میں مبتلا ہوگئے ہیں۔ پنجاب کی جیلوں میں ایڈز سے متاثرہ مریضوں کی تعداد294 ہے اور  پنجاب کی جیلوں میں اس وقت ہیپا ٹائٹس بی کے 137، شوگر کے 460 جب کہ ذہنی امراض میں مبتلا59 قیدی موجو د ہیں۔ جیل زرائع کے مطابق راولپنڈی ریجن کی جیلوں میں 80، راولپنڈی 62، لاہور ریجن 44، گوجرانوالہ 28، فیصل آباد 28، ساہیوال 20، سرگودھا 15، ملتان 7 جب کہ 6 ڈیرہ غازی خان ریجن میں 4 قیدی ایڈز میں مبتلا ہیں۔ اس وقت ہیپاٹائٹس کے مریضوں کی بڑی تعداد سینٹرل جیل گوجرانوالہ میں ہے جن کی تعداد 112 ہے، ان میں سے 76 قیدی انڈر ٹرائل ہیں۔ لاہور ریجن کی جیلوں میں 44، ساہیوال کی جیل میں 22 قیدی موجود ہیں، صرف راولپنڈی کی اڈیالہ جیل میں یہ تعداد 62 ہے۔ گوجرانوالہ کی سینٹرل جیل میں یہ تعداد 26 ہے، مختلف جیلوں میں ہیپا ٹائٹس سی کے 517 قیدی ہیں۔ ذرائع کے مطابق ذہنی امراض میں مبتلا 59 قیدیوں میں سے 12 کو پنجاب انسٹی ٹیوٹ آف مینٹل ہیلتھ میں داخل کرادیا گیا ہے۔جیل زرائع کے مطابق گرمی کی شدت کے باعث جیلوں میں بیمار قیدیوں کی تعداد میں اضافہ ہو جاتا ہے تاہم مناسب بندوبست کرکے قیدیوں کو موسم کی شدت سے بچایا جاسکتا ہے۔ گرمیوں میں حبس اور قیدیوں کی تعداد کے مطابق پنکھوں کا ہونا بے حد ضروری ہے۔ جیلوں کا ایک بہت بڑا مسئلہ اسیروں کی کثرت اور جگہ کی قلت ہے۔ جہاں پانچ قیدیوں کی گنجائش ہے، دس پندرہ تک بھی قیدی بند کر دیے جاتے ہیں۔ گرمیوں کے موسم میں پانچ بجے ہی قیدیوں کو کمروں میں بند کر دینا شدت موسم کی وجہ سے ان کے لیے سخت باعث تکلیف ہوتا ہے کیونکہ پھر انہیں دن کا باقی حصہ اور رات بھر اندر ہی رہنا پڑتا ہے۔آئی جی جیل مرزا شاہد سلیم بیگ کے مطابق  گرمی کے موسم میں جیلوں میں قیدیوں اور حوالاتیوں کے لیے بہترین اقدامات عمل میں لائے جاتے ہیں جیلوں میں موسم کی شدت کومدنظر رکھتے ہوئے کولر اور پنکھوں کا انتظامات کیا گیا ہے جبکہ لوڈشیڈنگ سے بچاؤکے لیے ڈبل لائن بچھائی گئی ہیں اسی طرح بیمار قیدیوں کے علاج معالجے کے لیے سہولتوں کے بہتر انتظامات موجود ہیں۔

جیلیں 

مزید :

صفحہ آخر -