ماں بیٹی سے رکشہ میں بداخلاقی کیس کی سماعت 17مئی تک ملتوی 

ماں بیٹی سے رکشہ میں بداخلاقی کیس کی سماعت 17مئی تک ملتوی 

  

لاہور(نامہ نگار)انسداد دہشت گردی کی عدالت کے جج اعجاز احمد بٹرنے چوہنگ کے علاقہ میں ماں بیٹی سے رکشہ میں بداخلاقی کرنے کے مقدمہ میں ملوث ملزمان کے کیس کی سماعت 17مئی تک ملتوی کردی  ملزمان کو جیل سے انسداد دہشتگردی کی خصوصی عدالت میں پیش کیا گیا پراسکیوٹر میاں محمد طفیل ملزمان کیخلاف دلائل دیئے ملزمان نے مقدمہ سے 7 اے ٹی اے کی دفعات کو لاہور ہائیکورٹ میں چیلنج کر رکھا ہے،ملزمان نے مقدمہ کو سیشن عدالت منتقل کرنے کی درخواست دائر کر رکھی ہے۔

اور موقف اختیارکیاہے کہ جب تک لاہور ہائیکورٹ کا فیصلہ نہیں آتا فرد جرم عائد نہ کی جائے، سرکاری وکیل کا موقف ہے کہ ملزمان نے ماں اور بیٹی کو گن پوائنٹ پر بداخلاقی  کا نشانہ بنایا،ملزمان نے خواتین کو قتل کرنے کی دھمکیاں دے کر بداخلاقی کا نشانہ بنایا،پولیس نے ملزم عمر فاروق اور منصب کے خلاف چالان جمع کرا رکھا ہے

پراسیکیوٹر کے مطابق ڈی این اے رپورٹ سے ملزمان کا جرم ثابت ہوتا ہے،پولیس نے ملزمان کیخلاف تمام شواہد کو چالان کا حصہ بنایا ہے،ماں بیٹی نے دونوں ملزمان کو شناخت کر لیا تھا۔

 ملزمان نے گزشتہ سال 22 اگست کی رات کو ماں بیٹی کو اسلحے کے زور پر زیادتی کا نشانہ بنایا تھا۔

مزید :

علاقائی -