بجلی لوڈشیڈنگ میں اضافہ، تاجروں کا احتجاج، دیہی علاقے زیادہ ٹارگٹ 

بجلی لوڈشیڈنگ میں اضافہ، تاجروں کا احتجاج، دیہی علاقے زیادہ ٹارگٹ 

  

ملتان،راجن پور(نیوزرپورٹر،نامہ نگار) ملتا ن سمیت جنوبی پنجاب میں بجلی لوڈ شیڈنگ کا بحران پھر شدت اختیار کرگیا،آٹھ گھنٹوں سے بھی زائد کی لوڈ شیڈنگ نے لوگوں کی مشکلات میں اضافہ کر دیا ہے،راجن پور شہر سمیت چوک الہ آباد و اردگرد کی کئی شہروں میں صبح پانچ بجے سے ایک بجے تک غیر اعلانیہ لوڈ شیڈنگ کی گئی جبکہ کئی علاقوں میں اس کے بعد بھی لوڈ شیڈنگ جاری رہی عوام کا کہنا ہے کہ راجن پور نئی حکومت کے (بقیہ نمبر38صفحہ7پر)

واضح اعلان کے باوجود بھی غیر اعلانیہ لوڈ شیڈنگ کا سلسلہ جاری ہے راجن پور میں مرمت کے نام پر صارفین کو گرمی میں اذیت دینے کا سلسلہ جاری ہے شہریوں نے واپڈا ڈویژن راجن پور اور حکومت کی نا اہلی کی شدید مذمت کرتے ہوئے کہا ہے کہ حکومت کے قول و فعل میں تضاد ہے اس سے اچھا تو نیا پاکستان تھا جہاں مسائل ختم ہونے جا رہے تھے سماجی کارکنوں نصراللہ گبول،سمیع اللہ اور غلام اکبر نے کہا کہ نئی حکومت نے ماضی کے مسائل اور مشکلات کو دوبارہ زندہ کر دیا ہے سابقہ حکومت پر ملبہ ڈالنے کی بجائے اپنی صلاحیتوں سے عوام کی مشکلات کو کم کریں بصورت دیگر اپنے سے بہتر لوگوں کیلئے اقتدار کے ایوانوں کو خالی کر دیں ایسا نہ ہو کہ عوام آپ کو نکال باہر کریں۔دریں اثناء جنوبی پنجاب کے مختلف علاقوں میں کئی کئی گھنٹے بجلی بندش اور ٹرپنگ سے لوگوں کی مشکلات میں اضافہ ہوگیا ہے،علاوہ ازیں تاجر براردری احتجاج کرتے ہوئے حکومت سے مسائل حل کرنے کا مطالبہ کیا ہے۔جبکہ دیہی علاقوں کو زیادہ ٹارگٹ کیا جارہا ہے۔

مزید :

ملتان صفحہ آخر -