میپکوافسر ایک ہزار گاڑیاں خریدنے کیلئے بے چین: کمپنیوں سے ڈیل فائنل 

میپکوافسر ایک ہزار گاڑیاں خریدنے کیلئے بے چین: کمپنیوں سے ڈیل فائنل 

  

 ملتان(نیوزرپورٹر)میپکو ملتان ریجن کے افسران نے ایکاکرلیا، اربوں روپے کی ایک ہزار گاڑیاں اونے پونے داموں فروخت کرنے کے لئے اختیارات کا ناجائز استعما ل ہورہاہے، میپکو افسران(بورڈ آف ڈائریکٹر)جلیل ترین، چیف ایگزیکٹو اللہ یار، ڈی جی ایچ آر لیاقت میمن، فنانس ڈائریکٹر میاں انصار نے مبینہ طور پر 50لاکھ کی بڑی گاڑی ڈبل کیبن ویگو ڈالہ 15لاکھ، مہران خیبر پانچ سے چھ لاکھ میں فروخت کرنے(بقیہ نمبر42صفحہ7پر)

 کے لئے من پسند کمپنیوں سے ریٹ مقرر کر لئے، عوامی و سماجی حلقوں نے چیف جسٹس آف پاکستان، وزیراعظم شہباز شریف،وفاقی وزیر توانائی خرم دستگیر سے اونے پونے داموں قیمتی گاڑیوں کی فروخت پر فوری نوٹس لیکر ملتان میں پیراں غائب پاور ہاس پر معمولی فالٹ کے حامل چار پلانٹ کی بحالی کا مطالبہ کردیا،زرائع کے مطابق میپکو افسران من پسند کمپنیوں کو گاڑیاں فروخت کرکے گاڑیاں اپنے پاس ہی رکھیں گے،زرائع کے مطابق میپکو ملتان ریجن کے کرپٹ افسران ڈائریکٹر جلیل ترین، چیف ایگزیکٹو اللہ یار، ڈی جی ایچ آر لیاقت میمن، فنانس ڈائریکٹر میاں انصار نے تین ارب روپے کے قریب میپکو کی ایک ہزار قیمتی گاڑیاں اونے پونے داموں بیچنے کے لئے اختیارات کے  ناجائز استعمال کا فیصلہ کرلیا ہے تاکہ قیمتی گاڑیوں کی فروخت کے باعث سرکاری گاڑیوں کا مال ان کی جیبوں میں جا سکے اس سلسلے میں مذکورہ میپکو افسران نے آپس کی ملی بھگت کے باعث قیمتی گاڑیاں من پسند پرائیویٹ کمپنیوں کو فروخت کرکے وہ گاڑیاں اپنے گھروں میں استعمال کے لئے پلان ترتیب دے دیا ہے کیونکہ میپکو بورڈ آف ڈائریکٹر کے اجلاس میں کئے گئے فیصلے کے مطابق 60فی صد واپڈا آفیسر اور 40فی صد میپکو کمپنی گاڑی کی خرید میں خرچ کرے گی لیکن کمال کی بات یہ ہے کہ جب واپڈا آفیسر ریٹائر ہو گا تو وہ گاڑی میپکو کی ملکیت کی بجائے واپڈا افسر کی ملکیت ہو گی جبکہ ایسا عمل غیر قانونی ہے کہ گاڑی واپڈا کی ملکیت کی بجائے واپڈا افسر کی ملکیت ہوجائے اس سلسلے میں عوامی و سماجی حلقوں نے چیف جسٹس آف پاکستان، وزیراعظم شہباز شریف،وفاقی وزیر توانائی خرم دستگیر سے اونے پونے داموں قیمتی گاڑیوں کی فروخت پر فوری نوٹس لیکر ملتان میں پیراں غائب پاور ہاس کے معمولی فالٹ کے حامل بند چار پلانٹ کی بحالی کا مطالبہ کردیا ہے جس کی وجہ سے ملتان سمیت جنو بی پنجاب میں لوڈشیڈنگ سے نجات ملے گی اور وافر مقدار میں عوام کو بجلی میسر ہو گی اسی لئے میپکو ملتان ریجن افسران کے اس غیر قانونی عمل کو فی الفور روکا جائے کیونکہ اربوں روپے کی قیمتی گاڑیاں اونے پونے داموں بیچنے کی وجہ سے سرکاری خزانے کو بڑا جھٹکا ہو گا اسی لئے اگر وہ قیمتی گاڑیاں فروخت کرنی ہی ہیں تو ان گاڑیوں کو قانون کے مطابق فروخت کرکے پیراں غائب روڈ پر عرصہ دراز سے بند معمولی فالٹ کے حامل چار پاور پلانٹ پر رقم خرچ کی جائے تو بجلی کی لوڈشیڈنگ میں واضح کمی آسکتی ہے اسی طرح مظفر گڑھ اور دیگر علاقوں میں بند پاور پلانٹ بھی بحال ہو سکتے ہیں دوسری طرف عوامی وسماجی حلقوں نے مذکورہ افسران کی کرپشن و لوٹ مار کے خلاف کاروائی کا بھی مطالبہ کردیا ہے واضح رہے کہ میپکو بورڈ آف ڈائریکٹر کے اجلاس میں اربوں روپے کی قیمتی گاڑیاں اونے پونے داموں بیچ کر مال بنانے کی منظوری دینے والا)بورڈ آف ڈائریکٹر) جلیل ترین بیرون ملک فرار ہے جس کے خلاف بھی کاروائی کی جائے اور اسے انٹر پول کے زریعے واپس لایا جائے جبکہ مذکورہ میپکو افسران کے خلاف فوری کاروائی کی جائے جو مذکورہ اجلاس میں غیر قانونی فیصلے کا فائدہ اٹھا رہے ہیں۔

مزید :

ملتان صفحہ آخر -