جمیعت کی صوبائی حکومت اور حرمین شریفین کے تقدس کیخلاف احتجاج کی تیاریاں 

جمیعت کی صوبائی حکومت اور حرمین شریفین کے تقدس کیخلاف احتجاج کی تیاریاں 

  

          تخت بھائی (تحصیل رپورٹر) جمعیت علماء اسلا م کے زیر اہتمام پشاور میں حرمین شریفین کے تقدس اور صوبائی حکومت کے خلاف احتجاجی مظاہرے کے لئے تیاریاں شروع کر دی۔ مردان ڈویژن کے مجلس عاملہ او ربلدیاتی نمائندوں کا مشرکہ اجلاس 14مئی کو صبح9بجے طلب کر لیا ہے۔اجلاس سے صوبائی قائدین خطاب کریں گے۔اس حوالے سے جے یو آئی کے ضلعی مجلس عاملہ کا اجلاس ضلعی امیر مولانا محمد قاسم کی صدارت میں ہوا جس میں 21مئی کو عمران خان اور صوبائی حکومت کے خلاف احتجاجی مظاہرے کی تیاریوں ختمی شکل دیدی گئی۔اجلاس میں فیصلہ کیا گیا کہ 14مئی کو گوجر گڑھی میں حاجی کشور خان ایڈوکیٹ کی رہائش گاہ پر مردان ڈویژن کے مجلس عاملہ،نظماء اور بلدیاتی نمائندوں پر مشتمل ایک اجلاس ہوگا جس میں تیاریوں کو ختمی شکل دی جائے گی۔اجلاس سے خطاب کرتے ہوئے مولانا محمد قاسم،قاری احسان الرحمان محسن،حافظ اختر علی،انور کمال،کشور خان ایڈوکیٹ،مولانا تاج الامین جبل،مولانا قیصر الدین اور دیگر نے کہاکہ عمران خان پاکستانی عوام کے مابین نفرت کے جو بیچ بو رہے ہیں اس کے خطرناک نتائج مرتب ہونگے۔انہوں نے کہاکہ ساڑھے تین سال میں عمران خان کی حکومت نے ملکی معیشت کو ڈبو دیا ہے اب دوبارہ وہ عوام کے پاس جا کر اسے گمراہ کرنے کی ناکام کوشش کررہے ہیں۔انہوں نے کہا کہ صوبائی حکومت نے نو سال میں صوبے کی معیشت کا جو حال کر دیا ہے ماضی میں اسکی مثال نہیں ملتی۔صوبے کے وسائل کو ختم کر کے مسائل میں اضافہ کر دیا ہے۔ صوبے میں بجلی اور گیس کی لوڈشیڈنگ عروج پر ہے لیکن صوبائی حکومت جلسوں میں مصروف ہیں۔انہوں نے کہاکہ عمران خان نے ایک سوچے سمجھے منصوبے کے تحت مسجد نبوی کی حرمت کو پامال کر دیا ہے جس کی جتنی بھی مذمت کی جائے وہ کم ہے۔انہوں نے کہاکہ وفاقی حکومت کو مسجد نبوی کی حرمت میں ملوث عناصر کو بے نقاب کر کے قرار واقعی سزا دینی چاہیئے۔ اجلاس میں مفتی سردار علی حقانی کے ایصال ثواب کے لئے فاتحہ خوانی کی گئی اور حکومت سے مطالبہ کیا گیا کہ مفتی سردار علی حقانی کے ٹریفک حادثے کی مکمل تحقیقات کرنی چاہیئے۔

مزید :

پشاورصفحہ آخر -