خیبر پختونخوا اسمبلی کے باہر ورکرویلفیئر ملازمین کا احتجا ج، پولیس کا لاٹھی چارج، 12گرفتار

  خیبر پختونخوا اسمبلی کے باہر ورکرویلفیئر ملازمین کا احتجا ج، پولیس کا ...

  

       پشاور (مانیٹرنگ ڈیسک) خیبرپختونخوا اسمبلی کے باہر ورکر ویلفیئر ملازمین کے احتجاج پر پولیس نے لاٹھی چارج اور آنسو گیس کا استعمال کیا اور 12ملازمین گرفتار کر لیے گئے ورکرز ویلفیئر ملازمین نے اپنی مستقلی نہ کرنے کیخلاف خیبرپختونخوا اسمبلی کے سامنے احتجاج کیا مظاہرین نے صوبائی حکومت کے خلاف نعرے بازی کی، مظاہرین نے خیبر روڈ کو یکطرفہ طور پر ٹریفک بند کیا گیا تھا ملازمین کا احتجاج جاری تھا کہ پولیس نے احتجاجی ورکرز ویلفیئر ملازمین کو منتشر کرنے کے لئے آنسو گیس اور لاٹھی چارج کا استعمال کیا جس میں 12ملازمین کو گرفتار کیا گیا پولیس نے ملازمین کو منتشر کرنے کے بعد خیبرروڈ کو ٹریفک کے لئے کھول دیا گیا مظاہرین کا کہنا ہے کہ سپریم کورٹ کی جانب سے ملازمین کو مستقل کرنے کے فیصلے کے بعد بھی صوبائی حکومت مستقل نہیں کر رہی ہے۔مظاہرین نے 3 ہزار سے زائد مرد و خواتین ورکرز ویلفیئر بورڈ ملازمین کو ریگولر کرنے کا مطالبہ کیا۔  جے یو آئی ف کے سربراہ مولانا فضل الرحمن نے پشاور میں ورکرز ویلفیئر بورڈ ملازمین کے احتجاج کے دوران مظاہرین پر لاٹھی چارج اور آنسو گیس شیلنگ کی شدید الفاظ میں مذمت کی۔ مولانافضل الرحمن نے واقعہ میں گرفتار ملازمین کی فوری رہائی کا مطالبہ کر دیا۔مولانا فضل الرحمن کا کہنا تھا کہ خیبر پختونخوا حکومت بدمست ہاتھی کا روپ دھار کر غم غصہ عوام پر نکالنا بند کرے۔ ورکرز ویلفیئر ملازمین پر صوبائی حکومت کا بدترین تشدد آمرانہ سوچ کی عکاسی ہے۔اپنے حقوق کیلئے پرامن احتجاج کرنا ہر پاکستانی کا بنیادی حق ہے۔صوبائی حکومت بوکھلا چکی ہے۔سرکاری ملازمین سے انسانیت سوز سلوک قابل مذمت ہے۔خیبرپختونخوا کی عوام موجودہ صوبائی حکومت سے اکتا چکی ہے۔تشدد کے ذمہ داروں کو کیفر کردار تک پہنچایا جائے۔ تمام گرفتار ملازمین کو فی الفور رہا کیا جائے۔

احتجاج 

مزید :

صفحہ اول -