بلوچستان میں زمینداروں  کا مطالبات کے حق میں احتجاج تیسرے روز بھی جاری

بلوچستان میں زمینداروں  کا مطالبات کے حق میں احتجاج تیسرے روز بھی جاری
بلوچستان میں زمینداروں  کا مطالبات کے حق میں احتجاج تیسرے روز بھی جاری

  IOS Dailypakistan app Android Dailypakistan app

کوئٹہ (ڈیلی پاکستان آن لائن)بلوچستان کے زمینداروں نے بجلی کی عدم فراہمی اور زرعی ٹیوب ویل کو شمسی توانائی پر منتقل کرانے کے حق میں تحریک شروع کر رکھی ہے۔ کوئٹہ کی اہم ترین سڑک زرغون روڈ پر کسانوں کی بیٹھک تیسرے روز بھی جاری ہے۔

زمیندار ایکشن کمیٹی میں شامل کسانوں اور کاشف کاروں نے اپنے مطالبات کے حق میں مسلسل تیسرے روز بھی بلوچستان اسمبلی کے باہر دھرنا جاری رکھا ہوا ہے۔

زمینداروں کا کہنا ہے کہ 2یا 3 گھنٹوں کی بجلی انکی ضرورت پوری نہیں کررہی ، تباہی پر ایوان کے باہر بیٹھے ہیں دھرنا مطالبات کی منظوری تک جاری رہے گا۔

خیال رہے کہ حکومت اور کیسکو نے زمینداروں کو 6 گھنٹے مکمل وولٹیج کے ساتھ بجلی فراہم کرنے کی یقین دہانی کرائی تھی لیکن زرعی فیڈروں پر 3 گھنٹے وولٹیج کی کمی بیشی کے ساتھ بجلی فراہم کی جارہی ہے۔جس کی وجہ سے زمینداروں کی فصلوں کو شدید نقصان پہنچ رہا ہے ان کی کروڑوں روپے کی فصلیں ، پھلدار درخت اور باغات تباہ ہورہے ہیں۔