ہزارہ صوبے کے قیام کےلئے صوبائی اسمبلی میں قرارداد پیش کی گئی ،پرویز خٹک

ہزارہ صوبے کے قیام کےلئے صوبائی اسمبلی میں قرارداد پیش کی گئی ،پرویز خٹک

گلیات (اے این این) خیبرپختونخوا کے وزیر اعلیٰ پرویز خٹک نے کہا ہے کہ ہزارہ صوبے کے قیام کےلئے صوبائی اسمبلی میں قرارداد پیش کی گئی ہے، منظوری کے بعد جلد وفاقی حکومت کو بھیج دیں گے، مسلم لیگ (ن) کی حکومت عوامی مسائل حل کرنے میں ناکام ہو گئی ہے، تین باریوں کے باوجود عوام کے لئے کچھ نہیں کیا، سیاحت کے فروغ کیلئے اقدامات کئے جا رہے ہیں، انگریز وں کا رائج کردہ دوہرا نظام تعلیم ختم کرکے یکساں نظام تعلیم نافذ کریں گے، امیر اور غریب کا فرق ختم کر دیں گے، صوبے میں حقیقی معنوں میں بلدیاتی نظام نافذکر رہے ہیں جس میں اختیارات صحیح معنوں میں نچلی سطح پر منتقل کئے جائیں گے، خیبرپختونخوا میں کرپشن کا مکمل خاتمہ کریں گے ۔وہ اتوار کی سہ پہر گلیات کے علاقہ نملی میرامیں پاکستان تحریک انصاف کے زیر اہتمام ایک عظیم الشان جلسے سے خطاب کر رہے تھے۔ ا س موقع پر سابق صوبائی وزیر سردار غلام بنی مرحوم کے بیٹے اور ن لیگ کے رہنما سردار وقار نبی نے اپنے ہزاروں حامیوں اور دوست احباب کے ہمراہ پی ٹی آئی میں شمولیت کا اعلان کیا۔ پرویز خٹک نے کہا کہ ہم ہر وہ کام کریں گے جو عوام پسند کریں گے اُنہوں نے کہا کہ ہزار ہ کے عوام اگر الگ صوبہ چاہتے ہیں تو اس کےلئے ہمارے ہی ارکان اسمبلی نے قرارداد پیش کر دی ہے اور ہم عنقریب صوبائی اسمبلی سے یہ قرار داد منظور کرکے مرکز بھیج رہے ہیں ا۔وزیر اعلیٰ نے کہا کہ پی ٹی آئی کی حکومت حقیقی معنوں میں ایک بلدیاتی نظام نافذکر رہی ہے جس میں اختیارات صحیح معنوں میں نچلی سطح پر منتقل کئے جائیں گے اور عوام کو با اختیار بنایا جائے گا جبکہ دوسرے صوبے بلدیاتی نظام کے نام پر عوام کو دھوکہ دے رہے ہیں جلسے سے رکن صوبائی اسمبلی سردار ادریس، پی ٹی آئی میں شامل ہونے والے سردار وقار بنی اورمحمود حیات عباسی، پی ٹی آئی کے رہنما راجہ مبین اور دیگر نے بھی خطاب کیا ۔قبل ازیں جب وزیر اعلیٰ نملی میرا پہنچے تو اُنہیں گھوڑوں کی بگی میں جلسہ گاہ پہنچا دیا گیا اس مو قع پر لوگوں نے عمران خا ن زندہ باد ، پرویز خٹک زندہ باداور سردار ادریس زندہ باد کے فلک شگاف نعرے لگائے ۔

                                پرویز خٹک

مزید : صفحہ آخر