ڈاکٹر طاہر القادری کے دونوں صاحبزادوں کے خلاف منی لانڈرنگ کی تحقیقات شروع کردی گئیں

ڈاکٹر طاہر القادری کے دونوں صاحبزادوں کے خلاف منی لانڈرنگ کی تحقیقات شروع ...
ڈاکٹر طاہر القادری کے دونوں صاحبزادوں کے خلاف منی لانڈرنگ کی تحقیقات شروع کردی گئیں

  



لاہور (ڈیلی پاکستان آن لائن) پاکستان عوامی تحریک کے سربراہ ڈاکٹر طاہر القادری کے دونوں صاحبزادوں حسن محی الدین اور حسین محی الدین کے خلاف نیب لاہور میں منی لانڈرنگ کی انکوائری کا انکشاف ہوا ہے۔

نجی ٹی وی پبلک نیوز نے نیب ذرائع کے حوالے سے دعویٰ کیا ہے کہ ڈاکٹر طاہر القادری کے صاحبزادوں کے خلاف سٹیٹ بینک کے فنانشل مانیٹرنگ یونٹ نے نیب کو شکایت کی تھی۔ فنانشل یونٹ نے 30 جون 2016 کو حسین اور حسن محی الدین کی مشکوک ٹرانزیکشنز سے متعلق نیب کو آگاہ کیا تھا جس کے بعد انکوائری شروع کی گئی تھی۔

نیب ذرائع کا کہنا ہے کہ 9 جون 2015کو طاہر القادری کے صاحبزادوں کے اکاﺅنٹ میں 14 اعشاریہ 028 ملین روپے کی رقوم محمود شاہ اور اکبر علی کے جوائنٹ اکاﺅنٹ سے جمع کرائی گئیں۔ اس کے بعد بھی اسی جوائنٹ اکاﺅنٹ سے رقوم منتقلی کا سلسلہ جاری رہا ۔

نیب لاہور کی جانب سے ڈاکٹر طاہر القادری کے صاحبزادوں کو بارہا طلبی کے نوٹسز بھجوائے گئے لیکن وہ پیش نہیں ہوئے، نیب کی جانب سے حسین اور حسن محی الدین سے تمام تر بینک ٹرانزیکشنز کا ریکارڈ بھی طلب کیا گیا تھا جو نیب لاہور کو فراہم نہیں کی گئیں۔

مزید : Breaking News /اہم خبریں /قومی /علاقائی /پنجاب /لاہور