فاٹا کے لئے پاک فوج کا یوتھ پیکیج

فاٹا کے لئے پاک فوج کا یوتھ پیکیج
فاٹا کے لئے پاک فوج کا یوتھ پیکیج

  

 پاک فوج کے سربراہ جنرل راحیل شریف نے عیدالاضحی اگلے مورچوں پر منائی اور آپریشن ضرب عضب میں مصروف جوانوں کے ساتھ عید ملے۔ بعدازاں وہ شمالی وزیرستان میں مصروف عمل جوانوں سے ملنے کے لئے میران شاہ گئے اور آپریشن ضرب عضب میں پیش رفت کا جائزہ لیتے ہوئے اب تک حاصل کئے گئے اہداف اور کامیابیوں پر اطمینان کا اظہار کیا۔وانا میں چیف آف دی آرمی سٹاف نے کہا کہ پاک فوج اور عوام کے عزم و ہمت کو مدنظر رکھتے ہوئے اس امر میں کوئی شبہہ نہیں کہ ہم اپنے ملک سے دہشت گردی کے کینسر کو ہمیشہ کے لئے جڑ سے اکھاڑ پھینکیں گے۔ انہوں نے شہداء اور زخمیوں کو زبردست خراج عقیدت پیش کیا، جنہوں نے ملک کے دفاع کے لئے عظیم قربانی پیش کی۔ بنوں میں آئی ڈی پیز کیمپ کے دورہ کے دوران پاک فوج کے سربراہ نے فاٹا کے عوام کی قربانیوں کو خراج تحسین پیش کرتے ہوئے یقین دلایا کہ پاک فوج عارضی طور پر بیدخل ہونے والے افراد کی مدد اور فوری بحالی کے لئے بھرپور مددکرے گی۔

 فاٹا کے نوجوانوں کو مرکزی دھارے میں لانے اور ان کی صلاحیتوں سے استفادہ کرنے کے لئے فاٹا کے نوجوانوں کے لئے ایک جامع یوتھ پیکیج کا اعلان کیا جس کے تحت فاٹا کے 14 ہزار نوجوانوں کو اگلے پانچ برسوں میں پاک فوج میں شامل کیا جائے گا ،جبکہ فوری طور پر پہلے 6 ماہ میں ایک ہزار نوجوانوں کو پاک فوج میں بھرتی کیا جائے گا۔ اس کے علاوہ فاٹا کے 1500 بچوں کو تمام کنٹونمنٹس میں آرمی پبلک سکولوں اور کالجوں میں مفت تعلیم کی سہولت فراہم کی جائے گی۔ ملٹری کیڈٹ کالجوں میں فاٹا کے طلباء کے لئے سالانہ بنیاد پر سیٹیں بھی مختص کی جا چکی ہیں۔ فاٹا کے نوجوانوں، بالخصوص عارضی نقل مکانی کرنے والوں کی تکنیکی مہارتوں کو فروغ دینے اور ان کو کارآمد شہری بنانے کے لئے انہیں تمام بڑے کنٹونمنٹس میں پاک فوج کے تحت چلنے والے ٹیکنیکل ٹریننگ کے اداروں میں تکنیکی تربیت فراہم کی جائے گی۔ فاٹا کے نوجوانوں کے لئے بڑے پیمانے پر سمندر پار ملازمتوں کے لئے انتظامات بھی کئے جا رہے ہیں۔

جنرل راحیل شریف کے عیدین اور دیگر تہوار اگلے مورچوں میں موجود فوجیوں کے ساتھ منانے سے فوج کا مورال بلند ہوا ہے۔ اس نازک موقع پر اس کی ضرورت بھی ہے۔ فاٹا کے ایک ہزار نوجوانوں کی فوج میں بھرتی کا اعلان خوش آئند ہے۔ اس سے جہاں علاقے میں بیروزگاری کم ہو گی، وہیں یہاں کے لوگوں میں قومی دھارے میں شامل ہونے کا احساس بھی پیدا ہو گا۔ جنرل راحیل شریف کے دہشت گردی کے کینسر کو جڑ سے اکھاڑنے کے عزم کے بعد قوم کی فوج کے ساتھ وابستگی میں مزید اضافہ ہو گا۔ فوجی دعوﺅں کے مطابق ضربِ عضب آپریشن کامیابی سے جاری ہے، اسے جتنا جلد ممکن ہو ،منطقی انجام تک پہنچایا جانا چاہئے، تاکہ فوج پورے ملک سے دہشت گردوں کا خاتمہ کرنے کے لئے سرگرم ہو سکے۔ دہشت گردی کا کینسر جڑوں سے ا±سی وقت اکھڑ سکتا ہے، جب ملک سے دہشت گردوں کا مکمل خاتمہ ہو جائے۔

وزیراعظم محمد نواز شریف نے بھی میران شاہ کا دورہ کیا، جس کے دوران انہیں جاری آپریشن ”ضرب عضب“ میں تباہ کئے جانے والے دہشت گردوں کے مرکزی ٹھکانے، بم بنانے والی فیکٹری اور ان کے زیر استعمال اسلحہ و مواصلاتی نیٹ ورک دکھایا گیا۔ اس موقع پر وزیراعظم نے اس امر کا اعادہ کیا کہ حکومت پاک فوج کے ساتھ مل کر جاری آپریشن ضرب عضب کے نتیجہ میں شمالی وزیرستان میں متاثر ہونے والے علاقوں کی تعمیر کا مرحلہ جلد شروع کرے گی۔ نقل مکانی کرنے والوں نے پاکستان کے لئے اپنا گھر بار چھوڑا اور دہشت گردی کے خاتمے کے لئے قربانی دی۔ حکومت متاثرین کی باعزت گھروں کو واپسی تک ان کی دیکھ بھال کرتی رہے گی اور متاثرہ علاقوں کے نوجوانوں کو ہنر سکھا کر اپنے پاو¿ں پر کھڑا کرے گی۔ پاک فوج کی انجینئرنگ ڈویڑن کے جی او سی میجر جنرل اختر جمیل راو¿ نے کہا ہے کہ پاک فوج کیمپوں میں رہنے والے آئی ڈی پیز کے لئے ہر ممکن سہولت فراہم کر رہی ہے۔ شمالی وزیرستان سے نقلِ مکانی کرنے والے آئی ڈی پیز کے لئے ہر ممکن اقدامات کئے گئے ہیں۔ ضلع بنوں میں قائم کیمپوں میں چھ لاکھ کے قریب متاثرہ افراد آئے ہیں، اور ان میں سے کوئی ایک بھی بھوکا نہیں سویا۔ آئی ڈی پیز میں شامل بچوں کے لئے سکول بھی قائم کئے جارہے ہیں، جبکہ کیمپوں میں موجود آئی ڈی پیز مطمئن ہیں۔ آئی ڈی پیز کے کیمپوں میں سیوریج کی سہولتیں فراہم کی جارہی ہیں۔ شمالی وزیرستان سے 84 فیصد متاثرین نے نقلِ مکانی کی اور بنوں میں دستاویزات کی تصدیق کے لئے بھی مراکز قائم کئے جارہے ہیں۔

 یہ اقدامات فاٹا کے عوام اور فاٹا کی ترقی و خوش حالی کے بے شمار مواقع پیدا کریں گے اور ایک پرامن اور ترقی پسند پاکستان کے لئے معاون ہوں گے۔ ٭

مزید : کالم