کارکنوں کے بہبود کے قانون پر عمل درآمد کی ضرورت

کارکنوں کے بہبود کے قانون پر عمل درآمد کی ضرورت
 کارکنوں کے بہبود کے قانون پر عمل درآمد کی ضرورت

  

حکومت پاکستان نے سال 1969ء کی لیبر پالیسی میں یہ فیصلہ کیا تھا کہ صنعتی کارکنوں کی فلاح وبہبود کے لئے ورکرز ویلفیئر فنڈ قائم کیاجائے گا، جس کے تحت کارکنوں کی رہائش کی بنیادی ضرورت پوری ہو۔ فنڈ قائم کرنے کے لئے وفاقی حکومت نے دس کروڑ روپے کا عطیہ جمع کرایا ۔

بعد ازاں ایک خصوصی قانون بعنوان ورکرز ویلفیئر فنڈ 1971ء کا نفاذ کیا گیا، جس کے تحت آجروں پر یہ ذمہ داری عائد کی گئی کہ وہ کارکنوں کی تنخواہ کی پانچ فیصدی رقم کے مساوی اس فنڈ میں ہر ماہ جمع کرائیں گے اور اس فنڈ کی دفعہ نمبر 6 کے مطابق اس فلاحی فنڈ کو کارکنوں کی رہائش کے انتظام اور دیگر فلاحی کاموں کے لئے قانونی ذمہ داری قبول کی گئی۔

اس فنڈ کے تحت وفاق اور ہر صوبہ میں صوبائی سطح پر ورکرز ویلفیئر بورڈ قائم کئے گئے جو حکومت کے علاوہ کارکنوں اور آجروں کے نمائندگان پر مشتمل ہیں۔ اس وقت فنڈ میں ایک کھرب پچاس کروڑ روپے سے زائد رقم وفاقی حکومت وزارت خزانہ کے پاس جمع شدہ ہے، لیکن مقام افسوس ہے کہ فنڈ کی رقم دو سال سے ادا نہیں ہورہی ، اسی وجہ سے کارکنوں کو اْن کے جائز حق ادائیگی میں غیر معمولی تاخیر کا باعث بن رہی ہے۔

2006ء 2007ء اور 2008ء میں قوانین میں ترامیم کرکے لیبر قوانین کا اطلاق واضح تر کیاگیا، لیکن یہ ترامیم غیر آئینی قرار دے دی گئیں اور سپریم کورٹ آف پاکستان نے وفاقی حکومت کو سال 2014ء میں اپنے فیصلہ میں حکم دیا کہ ان ترامیم کو ٹیکس ایکٹ کے ذریعے قابل نفاذ بنایاجائے تاکہ اس قانون کا وسیع طور پر زیادہ تنخواہ دار کارکنوں پر بھی اطلاق ہو، لیکن تاحال وفاقی حکومت نے اس سفارش پر عمل نہیں کیا، جس کی وجہ سے آج سابقہ قانون کے تحت کاٹی ہوئی زائد رقم کی واپسی کا مطالبہ کر رہے ہیں

۔ ماضی میں بعض ورکرز ویلفیئر بورڈ انتظامیہ نے اس فنڈ کا غیر قانونی استعمال کرکے اس کی قیمتی رقم کو ضائع کیا، جس کی وجہ سے بعض آفیسران صوبہ بلوچستان، خیبرپختونخوا میں قانون شکنی کی زد میں آگئے ہیں اور انہیں عدالتوں نے بدعنوانی کرنے پر شدید سزائیں دی ہیں۔

ان حالات میں ملک کے صنعتی و کمرشل اداروں کے ملازمین وزیراعظم پاکستان اور وفاقی وزیر خزانہ و اقتصادی امور سے پْرزور مطالبہ کرتے ہیں کہ وہ وفاقی حکومت خزانہ میں ورکرز ویلفیئر فنڈ کی جمع شدہ رقوم صوبائی ورکرز ویلفیئر فنڈ کو جلد بھجوا کر کارکنوں کی فلاح وبہبود کے جائز طور منظور شدہ بلوں کی فوری ادائیگی کریں، تاکہ کارکنوں کی جائزحق رسی ہو۔

مزید :

کالم -