پاکستان محض جغرافیائی خطہ نہیں بلکہ ایک نظریاتی ریاست ہے،پروفیسر رفیق احمد

پاکستان محض جغرافیائی خطہ نہیں بلکہ ایک نظریاتی ریاست ہے،پروفیسر رفیق احمد

  

لاہور(پ ر) تحریک پاکستان کے کارکن اور وائس چیئرمین نظریۂ پاکستان ٹرسٹ پروفیسر ڈاکٹر رفیق احمد نے کہا ہے کہ پاکستان محض جغرافیائی خطہ نہیں بلکہ ایک نظریاتی ریاست ہے۔پاکستان کا قیام قائداعظمؒ کے عزمِ صمیم ، بے لوث اور انتھک قیادت کا نتیجہ ہے۔پوری قوم بالخصوص نئی نسلوں کے سامنے تحریک پاکستان، دوقومی نظریہ اور مشاہیر تحریک آزادی کے افکارونظریات کی اذان کہنا وقت کی اہم ضرورت ہے ان خیالات کااظہار انہوں نے ایوان کارکنان تحریک پاکستان لاہور میں 146ویں نظریاتی ورکشاپ کے شرکاء سے خطاب کرتے ہوئے کیا۔جس میں گورنمنٹ انجینئرنگ اکیڈمی پنجاب کے زیرتربیت افسران نے شرکت کی۔

پروگرام کا باقاعدہ آغاز تلاوت کلام پاک ، نعت رسول مقبولؐ اور قومی ترانہ سے ہوا۔ نظامت کے فرائض سید عابد حسین شاہ نے انجام دیے۔پروفیسر ڈاکٹر رفیق احمد نے کہا کہ نئی نسلوں کو تحریک پاکستان اور اس دوران پیش آنیوالے اہم واقعات سے آگاہ کرنا بہت ضروری ہے۔پاکستان کا معرض وجود میں آنا ایک معجزے سے کم نہیں۔ بانئ پاکستان نے اپنی صحت کی پرواہ بھی نہیں کی اور اس عظیم مقصد کو پانے کیلئے چومکھی لڑائی لڑی۔ آزادی اللہ تعالیٰ کی بہت بڑی نعمت ہے ،ہمیں اس کی قدر کرنی چاہئے۔انہوں نے کہاپاکستان کو درپیش مسائل سے نکالنے کیلئے آج کے نوجوانوں کو ہنرمند اور تعلیم یافتہ بنانا بہت ضروری ہے۔اس سلسلے میں وفاقی اور صوبائی حکومتوں کو تعلیم دوست بجٹ بنانا ہوں گے۔۔ انہوں نے کہا ہر قوم کا ایک وژن اور نظریہ ہوتا ہے ۔ مسلمان اور ہندو ہر لحاظ سے الگ قوم ہیں اور یہی دوقومی نظریہ ہے جس کی بنیاد پر پاکستان معرض وجود میں آیا۔ انہوں نے کہا کہ قائداعظمؒ کو نوجوانوں سے بڑی امیدیں وابستہ تھیں ۔قیام پاکستان کی جدوجہد میں علی گڑھ یونیورسٹی ، اسلامیہ کالج لاہور اور اسلامیہ کالج پشاور کے طلبا اور دیگر نوجوانوں نے ہراول دستے کا کردار ادا کیا۔

مزید :

میٹروپولیٹن 1 -