فوج ، عدلیہ اور ایٹمی توانائی کمیشن میں قادنیوں کی بھرتی پر پابندی لگائی جائے ، قومی اسمبلی میں مطالبہ

فوج ، عدلیہ اور ایٹمی توانائی کمیشن میں قادنیوں کی بھرتی پر پابندی لگائی ...

  

اسلام آباد(صباح نیوز،این این آئی)حکمران جماعت کی طرف سے منگل کو بھی قومی اسمبلی میں فوج ،عدلیہ ایٹمی توانائی کمیشن میں اعلی افسروں سے عقیدت ختم نبوتؐ کا سرٹیفکیٹ لینے کا مطالبہ کردیا گیا ، مولاناسید ابولا علی مودودیؒ نے فتنہ قادیانی کتاب لکھ کر احسان کیا، قادیانی فتنہ ،اسلام اور پاکستان کے خلاف سازش ہے، افواج پاکستان میں قادیانیوں ،احمدیوں، لاہوری گروپ کی بھریتوں پر پابندی لگائی جائے کیونکہ قادیانی جہاد فی سبیل اﷲپر یقین نہیں رکھتے ان خیالات کا اظہارپاکستان مسلم لیگ (ن) کے رہنما کیپٹن (ر)محمدصفدرنے قومی اسمبلی میں نکتہ اعتراض پر کیا ۔ انھوں نے کہا کہ یہ ملک اس لیے بنایا گیا کہ اس کو ریاست مدینہ کی طرح چلایا جائے گا اسی معاملے پر ایوان میں گزشتہ روز بات کر رہا تھا عقیدہ ختم نبوتؐ اور اسلامی نظام کے نفاذ کے لیے پاکستان بناتھا ابھی میں یہ بات کر رہا تھا کہ ایک رکن نے کورم کی نشاندہی کردی ۔انھوں نے کہا کہ اصلاح احوال کے لیے بات کرنا ہماری ذمہ داری ہے۔ قادیانی فتنہ،پاکستان کیخلاف سازش ہے ۔قادیانی فتنہ، پاکستان کے نظریہ اور آئین کے لیے خطرہ ہیں اس معاملے پر اتفاق رائے سے قرارداد منظور کی جائے۔ میں فکر مودویؒ کی بات کررہا ہے ۔مولانا سید ابولا علی مودویؒ نے فتنہ قادیانی کتاب لکھ کر احسان کیا یہی بات میں ایوان میں کررہا ہوں۔مولانا مودودیؒ کی قبر نور سے بھری ہوئی ہے ان کی کتاب 1962ء میں کویت میں شائع ہوئی ۔سید ابو الاعلی مودودیؒ کی ان کتابوں کا عربی اور افریقی زبانوں میں ترجمہ ہوا دنیا بھر میں ان کی کتابوں کا مطالعہ ہورہا ہے ۔حکمران جماعت کے رہنما نے مطالبہ کیا کہ افواج پاکستان میں قادیانیوں ،احمدیوں، لاہوری گروپ کی بھریتوں پر پابندی لگائی جائے کیونکہ قادیانی جہاد فی سبیل اﷲپر یقین نہیں رکھتے ۔ہم روز محشر کیا جواب دیں گے آج فیصلہ کر لیں کہ ہم نبی پاک ؐ کے دشمنوں کو اہم عہدوں پر نہیں دیکھنا چاہتے تمام مکاتب فکر کا اس پر اتفاق ہے۔ ذوالفقار علی بھٹو کو اس لیے شہید کہتا ہوں اس نے ختم نبوتؐ کا تحفظ کیا۔ قومی اسمبلی میں اشخاص کی ناجائز تجارت بل 2017ء پیش کردیا گیا جسے مزید غور کے لئے متعلقہ قائمہ کمیٹی کے سپرد کردیا گیاجبکہ اجلاس کے دور ان مختلف قائمہ کمیٹیوں کی رپورٹس پیش کر دی گئیں منگل کو قومی اسمبلی میں بابر نواز خان نے اشخاص کی ناجائز تجارت بل 2017ء پیش کرنے کی اجازت چاہی۔ شیریں مزاری نے کہا کہ اس بل میں خصوصی افراد کے لئے استعمال ہونے والی زبان استعمال کی گئی ہے۔ شیخ آفتاب احمد نے اس کی مخالفت نہیں کی۔ نفیسہ شاہ نے کہا کہ اس بارے میں پہلے قانون موجود ہے۔ڈپٹی سپیکر نے ایوان سے بل پیش کرنے کی تحریک منظور کرائی۔ بابر نواز خان نے بل ایوان میں پیش کیا جسے متعلقہ قائمہ کمیٹی کے سپرد کیا گیا۔ڈپٹی سپیکر مرتضیٰ جاوید عباسی نے رواں ہفتے واپڈا کے حوالے سے ممبران کے تحفظات دور کرنے کے لئے اجلاس منعقد کرانے کی ہدایت کی ہے ۔نکتہ اعتراض پر عبدالستار بچانی نے کہا کہ گزشتہ اجلاس کے دوران واپڈا کے حوالے سے تشویش سے متعلق اجلاس بلانے کا فیصلہ ہوا تھا اجلاس نہیں ہوا ٗڈپٹی سپیکر نے کہا کہ یہ اجلاس ایک دو روز میں منعقد کیا جائے۔اجلاس کے دور ان مسلم لیگ (ن) کے رکن قومی اسمبلی میجر (ر) طاہر اقبال نے کہا کہ پی آئی اے دنیا کی چوٹی کی ایئرلائن تھی‘ اس نے جن ایئرلائنوں کی معاونت کی وہ آج دنیا میں صف اول میں ہیں‘ پی آئی اے کے حوالے سے ایوان کو مکمل بریفنگ دی جائے۔ میجر (ر) طاہر اقبال نے کہا کہ اس اسمبلی کے ممبران سے کام لیا جائے۔ پی آئی اے نے جن اداروں کی معاونت کی وہ آج ٹاپ پر ہیں اور ہماری ایئرلائن آخری نمبر پر ہے ٗپی آئی اے کے حوالے سے پوری بریفنگ دی جائے۔اسمبلی نے انسانی اعضاء اور عضلات کی پیوندکاری ایکٹ 2010ء میں مزید ترمیم کرنے کے بل کی منظوری دیدی جبکہ تیزاب اور آگ سے جلانے کے جرم کا بل 2017ء موخر کردیا گیا۔منگل کو قومی اسمبلی میں کشور زہرا نے انسانی اعضاء اور عضلات کی پیوندکاری ایکٹ 2010ء میں مزید ترمیم کرنے کا بل قائمہ کمیٹی کی رپورٹ کردہ صورت میں فی الفور زیر غور لایا جائے جس کی پارلیمانی سیکرٹری داخلہ درشن نے مخالفت کی اور موقف اختیار کیا کہ ایک ماہ کا وقت دیا جائے ہم ایسا ہی اپنا بل لا رہے ہیں۔ اپوزیشن ممبران نے کہا کہ دو کمیٹیوں سے یہ منظور ہو کر آیا ہے۔ فہمیدہ مرزا نے کہا کہ ڈاکٹر درشن یہ یقین دہانی کرائیں کہ یہی بل لائیں گے تو یہ موخر کردیا جائے ٗماروی میمن نے بھی اس کے حق میں آواز بلند کی۔ ایس اے اقبال قادری نے کہا کہ بل منظور کرایا جائے اور حکومت اگلے روز اپنا بل لے آئے۔ ڈپٹی سپیکر نے کہا کہ موجودہ دور میں سات نجی بل منظور ہوئے ہیں جو گزشتہ دور حکومت سے زیادہ ہیں۔ بعد ازاں ڈاکٹر درشن نے اس کی مخالفت نہیں کی۔متحدہ قومی موومنٹ پاکستان نے ایک بار پھر مردم شماری کے اعداد و شمار پر تحفظات ظاہر کرتے ہوئے قومی اسمبلی سے واک آؤٹ کیا۔ منگل کو قومی اسمبلی میں ساجد احمد نے نکتہ اعتراض پر کہا کہ سندھ نے شماریات ڈویژن کو لکھا ہے کہ سندھ میں مردم شماری کے اعداد و شمار سے ہم مطمئن نہیں ہیں ٗکراچی کی آبادی پونے تین کروڑ تک ہے۔ کراچی کی نشستیں بڑھنے کے خطرے کی وجہ سے کراچی کی آبادی کم بتائی جارہی ہے۔ این ایف سی ایوارڈ میں رقم کی کمی بھی ایک وجہ ہے ٗ ایم کیو ایم نے اس پر واک آؤٹ کیا۔قومی اسمبلی میں قائد حزب اختلاف سید خورشید شاہ نے پارلیمانی بزنس چھوڑ کر ایوان سے باہر جانے والے وزراء کو معطل کرنے کا مطالبہ کر دیا۔ انہوں نے قومی اسمبلی میں منظور ہونے والی قراردادوں کے حوالے سے حکومتی کارکردگی رپورٹ بھی پیش کرنے کا مطالبہ کیا ہے۔ یہ مطالبے انہوں نے منگل کو قومی اسمبلی میں صدر نشین آسیہ ناصر کی طرف سے ایجنڈے کے تحت بزنس لینے کی بجائے نکتہ اعتراضات لینے پر کیا۔ سید خورشید شاہ نے کہا کہ ایجنڈے پر اہم قراردادیں بھی موجود ہیں۔ نکتہ اعتراضات سے پہلے ترتیب وار ایجنڈا اٹھایا جائے۔ صدر نشین نے کہا کہ اس بزنس کے حوالے سے متعلقہ وزراء کی موجودگی ضروری ہے۔ قائد حزب اختلاف نے اجلاس کی چیئرپرسن سے مطالبہ کیا کہ وہ جرات مندی دکھائیں اور بزنس چھوڑ کر ایوان سے باہر جانے والے وزراء کو معطل کرنے کا حکم جاری کر دیں۔ انہوں نے کہا کہ ایوان سے گذشتہ چار سالوں میں اہم قراردادیں منظور ہوئی ہیں۔ حکومت سے ان قراردادوں پر عملدرآمد کے حوالے سے کارکردگی رپورٹ طلب کی جائے۔ اپوزیشن لیڈر کے ان مطالبات کے دوران ڈپٹی سپیکر اجلاس میں آ گئے اور ایجنڈے کے مطابق کارروائی شروع کر دی۔قومی اسمبلی نے بلوچستان کے خلاف پروپیگنڈہ سے بین الاقوامی فورم پر دانشمندی اور پوری قوت سے نمٹنے کیلئے اقدامات کرنے کی قرارداد منظور کرلی۔ منگل کو قومی اسمبلی میں شاہدہ رحمانی نے قرارداد پیش کی کہ حکومت بلوچستان کے خلاف پروپیگنڈے سے بین الاقوامی فورمز پر دانشمندی اور پوری قوت سے نمٹنے کیلئے اقدامات کرے۔

قومی اسمبلی

مزید :

صفحہ اول -