سانحہ ماڈل ٹاؤن انکوائری رپورٹ منظر عام پر لانے کے عدالتی حکم کیخلاف حکومتی اپیل کی سماعت آج ملتوی

سانحہ ماڈل ٹاؤن انکوائری رپورٹ منظر عام پر لانے کے عدالتی حکم کیخلاف حکومتی ...

  

لاہور(نامہ نگار)لاہور ہائیکورٹ نے سانحہ ماڈل ٹاؤن انکوائری رپورٹ منظر عام پر لانے کے عدالتی حکم کے خلاف حکومتی اپیل کی سماعت آج تک ملتوی کر دی ، عدالت نے حکومتی اپیل کی پیروی کے لئے نجی وکیل کی خدمات حاصل کرنے کے خلاف دائردرخواست پر نوتس جاری کرتے ہوئے جواب طلب کر لیاہے۔جسٹس عابد عزیز شیخ کی سربراہی میں جسٹس شہباز علی رضوی اور جسٹس قاضی محمد امین پر مشتمل بنچ نے دخواستوں پر سماعت کی، حکومت پنجاب کے وکیل خواجہ حارث نے موقف اختیار کیا کہ سنگل بنچ نے حکومتی موقف پوری طرح نہیں سنا اور یکطرفہ فیصلہ دیا، انکوائری رپورٹ کے متعلق درخواستیں فل بنچ میں زیر التوا ہونے کے باعث سنگل بنچ کو فیصلے کا کوئی اختیار نہیں تھا،سنگل بنچ نے جلدبازی میں قانونی تقاضوں کے برعکس فیصلہ دیا، دوران سماعت متاثرین کے وکیل اظہر صدیق نے پنجاب حکومت کی جانب سے خواجہ حارث کے پیش ہونے اور نجی وکیل کی تعیناتی کے خلاف دائر درخوست پر بحث کی، انہوں نے کہا کہ اعلیٰ عدلیہ کے فیصلے کے مطابق حکومت کی جانب ایڈووکیٹ جنرل ہی پیش ہو سکتے ہیں،پنجاب حکومت نے اپیل کی پیروی کے لئے خواجہ حارث کی خدمات لیں جو کہ قانون کے منافی ہے، عدالت خواجہ حارث کو پیروی سے روکے اور سرکاری وکیل کو پیروی کرنے کا حکم دے،انہوں نے استدعا کی کہ خواجہ حارث کی تعیناتی سے متعلق پیش کیا جانے والا ریکارڈ عدالتی ریکارد کا حصہ بنایا جائے جس پر عدالت نے خواجہ حارث کو دلائل جاری رکھنے کی ہدایت کرتے ہوئے حکومت پنجاب کو نوتس جاری کرتے ہوئے سماعت آج 11اکتوبر تک ملتوی کر دی ہے۔

مزید :

صفحہ آخر -