فوڈ اتھارٹی کا لاہور اور قصور میں گٹکا مافیا کیخلاف کریک ڈاؤن، سب سے بڑا سپلائر پکڑا لیا

فوڈ اتھارٹی کا لاہور اور قصور میں گٹکا مافیا کیخلاف کریک ڈاؤن، سب سے بڑا ...

  

لاہور(کامرس رپورٹر)وزیر اعلی پنجاب محمد شہباز شریف کی ہدایت پر عمل کرتے ہوئے عوام کو صحت مند اور معیاری خوراک کی فراہمی یقینی بنانے کے لیے پنجاب فوڈ اتھارٹی کا ناقص اشیا ء خورونوش بنانے اور بیچنے والوں کے خلاف کریک ڈاون جاری ۔اس سلسلے میں پنجاب فوڈ اتھارٹی ٹیموں نے لاہور اور قصور میں کاروائیاں کرتے ہوئے گٹکا اور ملاوٹ مافیا کے خلاف کریک ڈاؤن کرتے ہوئے قصور کا سب سے بڑا گٹکا سپلائر پکڑا لیا۔ایڈیشنل ڈائریکٹر جنرل آپریشنز رافیعہ حیدر نے تفصیلات سے آگاہ کرتے ہوئے بتایا کہ کاروائی کے دوران موقع سے 28ہزار پیکٹ گٹکا برآمد کر کے تلف کر دیا گیا۔ مزید کاروائیوں میں قصور کے مضافاتی گاؤں کھڈیاں خاص میں جعلی کیچپ کی 2 فیکٹریاں پکڑی گئی۔ 6ہزار کلو ناقص کیچپ، ساڑھے چار ہزار مائیو نیز برآمد کر کے تلف کر دیے گئے ۔ملزمان موقع سے فرار، فیکٹریوں کا تمام سامان اکھاڑ کر قبضے میں لے لیا گیا۔ سٹارچ، کیمیکل اور فلیور کی مدد سے جعلی کیچپ تیار کر کے معروف برانڈز کے نام سے پیک کیا جاتا تھا۔ لاہور میں گرومانگٹ روڈ پرلاہوری سویٹس اینڈ بیکرز، رانا بابو ہوٹل اینڈ ریسٹورنٹ اور چکن پزا کو مجمو عی طور پر 27,000 جرمانہ عائدمزید برآں 100سے زائد گٹکا پیکٹس ، 200گرام نان فوڈ کلرموقع پر تلف کر دیا گیا۔ لاہور ،قصور،اور شیخو پورہ میں معائنہ کے دوران حاجی محمد اشرف آٹا چکی، حاجی ہدایت اللہ آٹا چکی، عامر مٹن اینڈ بیف شاپ، حافظ کریانہ سٹور، السویٹس، الطاف جنرل سٹور، ابن حسن کریانہ سٹور، جاوا سویٹس، الحبیب سویٹس اینڈ بیکرزاور متعدد فوڈ پوائنٹس کو حفظانِ صحت کے اصولوں کو ذہن نشین رکھتے ہوئے عوام کو معیاری خوراک مہیا کرنے کی ہدایات دی گیں اور دیگر متعدد کو ناقص انتظامات کی بنا پر وارننگ نوٹس جاری کئے ۔ علاوہ ازیں چیئرمین پرائس کنٹرول کمیٹی میاں عثمان کی سربراہی میں ٹیم نے گلبرگ مین مارکیٹ کا اچانک دورہ کر کے اشیائے خوردو نوش کی سرکاری نرخوں کے مطابق فروخت اور معیار کا جائزہ لیا ، گراں فروشی پر بڑے ڈیپارٹمنٹل سٹورز جلال سنز اور گلوبل سٹورزسمیت 7دکانداروں کو ہزاروں روپے کے جرمانے کئے گئے جبکہ چھ دکانداروں کو مقدمے کا اندراج کرا کے گرفتار کرا دیا گیا۔تفصیلات کے مطابق چیئرمین پرائس کنٹرول کمیٹی میاں عثمان نے گلبرگ مین مارکیٹ اور اطراف کے علاقوں کا دورہ کر کے بڑے ڈیپارٹمنٹل سٹورز ،سبزیوں، پھلوں اور گوشت کی دکانوں پر معیار اور سرکاری نرخوں کے مطابق فروخت کا تفصیل سے جائزہ لیا۔ اس موقع پر جلال سنز اور گلوبل سٹورز سمیت سات دکانداروں کو ہزاروں روپے جرمانے کئے گئے جبکہ 6دکانداروں کو مقدمے کا اندراج کرا کے موقع پر ہی گرفتار کرا دیا گیا۔ میاں عثمان نے جلال سنز اور گلوبل سٹورز کے خلاف بھی مقدمہ درج کرانے کی ہدایت کی۔چیئرمین پرائس کنٹرول کمیٹی نے اس موقع پر دکانداروں کی جانب سے بعض شہریوں سے سرکاری نرخ نامے سے زائد وصول کی گئی رقم بھی واپس کرادی۔ میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے میاں عثمان نے کہا کہ گراں فروشوں کے خلاف کریک ڈاؤن میں تیزی لائی گئی ہے او ربلا امتیاز کارروائی کی جارہی ہے۔ انہوں نے کہا کہ زمینی حقائق کو مد نظر رکھتے ہوئے سرکاری ریٹ لسٹ مرتب کی جاتی ہے جس میں دکانداروں کا جائز منافع رکھا جاتا ہے۔ اگر اس کے باوجود گراں فروشی کی جائے گی تو اسے کسی صورت برداشت نہیں کیا جائے گا۔

مزید :

صفحہ آخر -