جماعت اسلامی بنگلا دیش کا مرکز رہنماؤں، کارکنوں کی گرفتاریوں کیخلاف اعلان احتجاج

جماعت اسلامی بنگلا دیش کا مرکز رہنماؤں، کارکنوں کی گرفتاریوں کیخلاف اعلان ...

  

ڈھاکہ(مانیٹرنگ ڈیسک)بنگلہ دیش پولیس نے دہشتگردانہ سرگرمیوں کو فروغ دینے اور ملک میں سیاسی انتشار و افرا تفری مچانے کا منصوبہ بنانے کے الزام میں ملک کی اپوزیشن کی سب سے بڑی منظم دینی و سیاسی تنظیم جماعت اسلامی کیخلاف ملک گیر کریک ڈاؤن کرتے ہوئے مرکزی امیر مقبول احمد اور سیکرٹری جنرل ڈاکٹر شفیق الرحمن سمیت متعدد مرکزی رہنماؤں اور اہم کارکنوں کو گرفتار کر لیا ہے۔غیر ملکی میڈیا کے مطابق ڈھاکہ میٹرو پولٹین پولیس کے محکمہ سراغرسانی کے ڈپٹی کمشنر شیخ نجم الاسلام نے تصدیق کرتے ہوئے کہا ہے گرفتار شدگان میں امیر جماعت اسلامی مقبول احمد اور جنرل سیکرٹری شفیق الرحمن سمیت سابق وزیر میاں غلام پروار، چاٹگام جماعت اسلامی کے امیر شاہجہا ں ،سیکرٹری جنرل نذر الاسلام،اور چاٹگام جنوب کی شاخ کے امیر ظفر صدیق شامل ہیں، انہیں اس وقت گرفتار کیا گیا جب وہ ایک مکان میں جمع ہو کر دہشت گردانہ کارروائیاں کرنے کی منصوبہ بندی کر رہے تھے، مکان مالک نوشیر علی کو بھی گرفتار کر لیا گیا ہے۔دوسری طرف جماعت اسلامی بنگلہ دیش نے مرکزی امیر اور سیکرٹری جنرل کی گرفتاری کے بعد پروفیسر مجیب کو قائم مقام امیر اور مولانا اتم معصوم کو عبوری سیکرٹری جنرل مقرر کرتے ہوئے حکومت اور پولیس کے الزامات کویکسر مسترد کرتے ہوئے مرکزی رہنماؤں اور کارکنوں کی گرفتاریوں اور کریک ڈاؤن کیخلاف ملک گیر احتجاج کا اعلان کیا ہے۔جماعت اسلامی کی طرف سے کہا گیا ہے جس میٹنگ کی بات کی جا رہی ہے وہ ایک غیررسمی ملاقات تھی، حکومت اقتدار پر قابض رہنے کیلئے ایسے اوچھے ہتھکنڈے استعمال کر رہی ہے ۔

مزید :

صفحہ آخر -