قبائل نے اسلام آباد دھرنے پر ارکان اسمبلی کو آڑھے ہاتھوں لیا

قبائل نے اسلام آباد دھرنے پر ارکان اسمبلی کو آڑھے ہاتھوں لیا

  

باجوڑ ایجنسی ( نمائندہ پاکستان )قبائل نے اسلام آباد دھرنے پر ارکان اسمبلی کو آڑے ہاتھوں لیا ۔مختلف قسم کے الزامات عائد ۔شاہ جی گل نے پیچھے ہٹ کر قبائل کی عزت کو خاک میں ملا دیا ۔فاٹا سٹوڈنٹس کیساتھ ہاتھا پائی پر بھی برہم۔تفصیلات کے مطابق باجوڑ ایجنسی میں اسلام آباد دھرنے میں ارکان اسمبلی کا حکومت سے ناکام اور لاحاصل مزاکرات سے عوام انتہائی برہم ہو چکے ہیں اور اُنہوں نے اس سارے ڈرامے کے ذمہ دار ارکان اسمبلی کو ٹہرایا ہے اخبارکو انٹرویو دیتے ہوئے شہریوں محمد منیر ،ارشاد خان و دیگر نے کہا کہ سیاسی پارٹیوں کے کارکنان اور جوانوں کو صرف اور صرف تکلیف دیا گیا اور غریب قبائلیوں کے کرایوں کے پیسے خرچ ہوئے اُنہوں نے کہا کہ دورہ باجوڑ کیدوران ایجنسی کے لوگوں نے شاہ جی گل کو عزت دی اور اُس کیساتھ دھرنے کو کامیاب کرانے کیلئے شریک ہوئے لیکن موصوف نے کاروباری لہجہ اپنا کر باجوڑ ایجنسی کے طلباء کیساتھ ہاتھا پائی پر اُتر آئے جو جمہوری اقدار کے خلاف ہیں اُنہوں نے کہا کہ باجوڑ ایجنسی کے ہر پارٹی میں منجھے ہوئے سیاستدان موجودتھے اور حکومت کے آنکھوں میں آنکھیں ڈال کر بات کر سکتے تھے لیکن اُن کو مزاکرات سے دور رکھا گیا اور صرف خانہ پُری کی گئی دوسری طرف پاکستان تحریک انصاف کے رہنماء اور ہر دلعزیز شخصیت انورزیب خان نے کہا کہ اگر شاہ جی گل دو روپے کیلئے قبائلی عوام کو بدنام کررہے ہیں تو تاریخ اُنہیں کبھی معاف نہیں کرے گا اور وہ آئندہ کیلئے قبائل کیطرف سے بھی کسی خوش فہمی میں نہ رہے کیونکہ قبائل اپنی عزت اور بے عزتی جانتے ہیں اور اچھے اور برے کا تمیز بھی رکھتے ہیں اُنہوں نے کہا کہ پی ٹی آئی کے قائدین اس کالے قانون کو ختم کرینگے اُنہوں نے باجوڑ کے ریحان زیب ،رحمان ولی احساس اور دیگر طلباء پر شاہ جی گل کے غونڈوں کی تشدد پر برہمی کا اظہار کرتے ہوئے کہا کہ اگر شاہ جی گل واقعی سیاستدان ہے تو اُسے سفارتی اور جمہوری آداب کا خیال رکھنا چاہیے ۔

مزید :

کراچی صفحہ اول -