ریجنل ٹیکس آفس ساہیوال کے قیام سے ملتان میں افسران و ملازمین کی شدید قلت

ریجنل ٹیکس آفس ساہیوال کے قیام سے ملتان میں افسران و ملازمین کی شدید قلت

  

ملتان(نیوز رپورٹر) ریجنل ٹیکس آفس (آر ٹی او) ان لینڈ ریونیو ساہیوال کے قیام سے آر ٹی او ملتان میں افسران و ملازمین کی شدید قلت واقع ہوگئی ہے۔ جس کے باعث متعدد افسروں اور ملازمین کی بڑی تعداد کو ڈبل ڈیوٹی دینی پڑ رہی ہے۔ آر ٹی او ملتان سے 210 افسروں اور ملازمین کا آر ٹی او ساہیوال تبادلہ اور آر ٹی او ملتان ریجن کے اضلاع خانیوال، ملتان ، مظفر گڑھ، لیہ، ڈی جی خان اور راجن پور (بقیہ نمبر42صفحہ12پر )

سے کیے گئے تبادلوں کے باعث ان شہروں میں آڑ ٹی او دفاتر میں سٹاف کی شدید کمی واقع ہوگئی ہے۔ آر ٹی او ملتان کے دفاتر میں متعدد افسروں اور ملازمین کو اضافی چارج اور اضافی ڈیوٹی ادا کرنا پڑ رہی ہے۔ اس صورتحال میں زیادہ تر متاثرین میں ان لینڈ آفیسرز ہیں توحید رزاق ان لینڈ آفیسر ڈی جی خان اور راجن پور کیلئے ڈبل ڈیوٹی دے رہے ہیں۔ ان لینڈ آفیسر ناصر بھی یونٹ 66اور ودہولڈنگ یونٹ 03میں ڈبل ڈیوٹی انجام دے رہے ہیں جبکہ کمشنر ایچ آر ایم ڈاکٹر خلیل احمد زاہد کے چیف کمشنر آر ٹٰ او ساہیوال تعیناتی کے بعد تاحال ایچ آر ایم یونٹ میں کمشنر کی تعیناتی تاخیر کا شکار ہے جبکہ سپیشل اسسٹنٹ کمشنر ملتان زدن شاہ جہان درانی پچھلے سات سالوں سے ایک ہی پوسٹ پر تعینات ہیں اپنے ذاتی اثرو سوخ کے باعث چند دنوں کی ٹرانسفر کے بعد فوری واپس آکر ملتان زون سنبھال لیتے ہیں جبکہ کارپوریٹ زون جوکہ ملتان ریجن کا اہم ترین زون ہے اس میں جونیئر خواتین اسسٹنٹ کمشنر ثناء سلیم ، ثناء مخدوم اور ثناء سلیم جنجوعہ ک تعیناتی شکوک و شہبات کا باعث ہے۔

افسران قلت

مزید :

ملتان صفحہ آخر -