کوھاٹ میں ایک اور خاتون مسیحائی کی بھینٹ چڑھ گئی

کوھاٹ میں ایک اور خاتون مسیحائی کی بھینٹ چڑھ گئی

  

کوھاٹ( بیورورپورٹ) کوھاٹ میں ایک اور خاتون مسیحائی کی بھینٹ چڑھ گئی ناتجربہ کار ڈاکٹر کا ہوس زر کی لالچ میں غلط آپریشن‘ حالت بگڑنے پر پشاور ریفر‘ لیاقت میموریل ہسپتال کے عملہ نے سہولیات کی عدم موجودگی کا تیر بہدف نسخہ آزما کر مریضہ سے جان چھڑائی‘ چھ روز تک موت و حیات کی کشمکش میں رہنے کے بعد مریضہ زندگی کی بازی ہار گئی لواحقین کا متعلقہ ڈاکٹر کے خلاف مقدمہ درج کرنے کا فیصلہ‘ ذرائع کے مطابق ایک خاتون مریضہ فرہاد بیگم زوجہ نثار خان کو لاچی پایان سے پیٹ میں تکلیف کے باعث لیاقت میموریل ہسپتال کوھاٹ لایا گیا جہاں سہولیات کی عدم فراہمی کا بہانہ بنا کر اسے بہرام میڈیکل سنٹر کے ڈاکٹر نور ناصر خٹک کے پاس بھیج دیا گیا مذکورہ ڈاکٹر نے ہوس زر کی خاطر اس کا آپریشن تجویز کیا اور چھ بیگ خون لانے کا کہا خون فراہم کرنے کے بعد مریضہ کا آپریشن کر دیا گیا مگر اس کی تکلیف میں کوئی کمی نہیں آئی بلکہ حالت مزید بگڑنے لگی ڈاکٹر نور ناصر خٹک نے اپنی فیس کھری کرنے کے بعد اس کا مزید علاج معالجہ کرنے سے انکار کرتے ہوئے اسے پشاور ریفر کر دیا پشاور میں چھ دن موت و حیات کی کشمکش میں مبتلا رہنے کے بعد بالآخر وہ خالق حقیقی سے جا ملی اور ڈاکٹروں کے تجربات کی بھینٹ چڑھتے چڑھتے اس نے دکھوں سے ہمیشہ کے لیے نجات حاصل کر لی اس حوالے سے مریضہ کے لواحقین نے بتایا کہ وہ مذکورہ ڈاکٹر کے خلاف قانونی چارہ جوئی کا حق استعمال کریں گے تاکہ آئندہ وہ کسی کا غلط آپریشن کرنے کی ہمت نہ کر سکے یاد رہے کہ مریضہ سابق ضلع ناظم مولانا نیاز محمد کی قریبی رشتہ دار تھیں۔

مزید :

پشاورصفحہ آخر -