بونیر ،13 تا 15 اکتوبر کو فیسٹول کی تیاریاں مکمل

بونیر ،13 تا 15 اکتوبر کو فیسٹول کی تیاریاں مکمل

  

بونیر (ڈسٹرکٹ رپورٹر)ڈپٹی کمشنر ظریف المعانی ،ڈسٹرکٹ ناظم ڈاکٹر عبید اللہ خان اور نائب ناظم یوسف علی خان نے کہا ہے کہ ضلعی انتظامیہ اور ضلعی حکومت کی مشترکہ کوششوں سے خوبصورت وادی چعر زئی کے پرفضا ء مقام شہیدہ سر میں اس ماہ کے 13تا 15 منعقد کی جانے والی فسٹول کے لیے تمام تر تیاریاں مکمل کی جاچکی ہے اور ضلع کے اندر اور باہر کے اضلاع سے اھم شخصیات کو مدعو کرنے کے لیے ایک ھزار کارڈز کی تقسیم کا عمل شروع کیا گیا ہے اور فسٹول میں مختلف کھیل کھود اور قومی و ملی ترانے،روائتی موسیقی اور ٹلینٹ شو کے ساتھ ساتھ شعراء کرام،ادیب،دانشور،علماء کرام،طلباء و طالبات ،صحافی اور دیگر شعبہ جات سے تعلق رکھنے والوں کی امد کو ختمی شکل دے کرشرکت کو یقینی بنایا گیا ہے ۔اور مرد و خواتین سیاح اور انکے ساتھ انے والے بچوں کی سیر اور تفریح کے لیے ہر سہولت مہیا کیا گیا ہے اور فسٹسول کے مقام پر دن رات گزاری کے لیے ٹینٹ ولیج قائیم کیا گیا ہے اور بجلی ،پانی،واش روم،ٹیلیٹ،پینے کا صاف پانی اور مختلف نوعیت کے کئی سٹال لگانے کی منصوبہ بندی کی گئی ہے اور کیٹرنگ کا ٹھیکہ معروف ٹی وی انکر جمشید علی خان کو دیا گیا ہے جس کو ایسے پروگرام منعقد کروانے کا وسیع تجربہ ہے ۔انھوں نے مذید کہا ہے کہ اس فسٹول کو شایان شان طریقے سے منانے کے لیے معروف شحصیات کو شرکت کی دعوت دی گئی ہے اور ساتھ انتہائی اھم سلیبرٹیز کو افتتاحی اور اختتامی پروگرام میں دعوت خا ص دی گئی ہے اور امید ظاہر کی ہے کہ یہ فسٹول علاقہ چعرزئی کے عوام کو سیر و تفریح کے مواقع فراھم کرنے کے ساتھ ضلع بھر کے علاوہ ملاکنڈڈویژن ،کے پی اور ملک کے دیگر حصوں خاصکر ھزارہ ڈویژن اور پنجاب کے اضلاع سے سیاحوں کے لیے ایک اچھی اور سستی تفریح کے ساتھ سرسبز و شاداب پہاڑی سلسلوں کی قدرتی حسن کو دوبالا کرنے والے شفاف پانی کے چشموں سے لطف اندوزہونے کا پورا موقع فراھم کرے گا ۔اور باور کرایا ہے کہ بونیر کی انٹری پوائنٹس سے لے کر فسٹول کے مقام تک جگہ جگہ اویزاں فنافکس انکی راھنمائی کرگی اور بونیر کے عیور عوام اور مھمان نوازی کے لیے مشہور چعر زی وال قوم انکے لیے چشم براہ ہونگے۔انھوں نے میڈیاں سے اپیل کی ہے کہ سیاحت کو فروع دینے کی کوشش میں ضلعی انتظامیہ اور ضلعی حکومت کا ساتھ دیں تاکہ سیاحت کو فروع ملے،کاروبار کے مواقع پیدا ہو اور امدن بڑھے اور ہر ایک کو گھر کی دہلیز پر عزت کے ساتھ دو وقت کی روٹی میسر ائے اور یو ں زندگی پر سکون گزرے۔

مزید :

پشاورصفحہ آخر -