” رات کو ہم لڑکیاں چھیڑنے آئے تھے لیکن پھر ۔۔۔“ کراچی سے ایسی ویڈیو منظر عام پر آگئی کہ سب ’ بے شرموں‘ کو نصیحت ہو جائے گی

” رات کو ہم لڑکیاں چھیڑنے آئے تھے لیکن پھر ۔۔۔“ کراچی سے ایسی ویڈیو منظر عام ...
” رات کو ہم لڑکیاں چھیڑنے آئے تھے لیکن پھر ۔۔۔“ کراچی سے ایسی ویڈیو منظر عام پر آگئی کہ سب ’ بے شرموں‘ کو نصیحت ہو جائے گی

  

کراچی (ڈیلی پاکستان آن لائن) بازاروں اور راہ چلتے ہوئے خواتین کو ہراساں کرنا عام بات ہے لیکن کراچی میں محرم کے جلوس میں بھی کچھ نوجوانوں نے خواتین کے ساتھ بدتمیزی کی کوشش کی لیکن ان کی بدقسمتی کہ وہ رضا کاروں کے ہتھے چڑھ گئے ۔ جس کے بعد انہیں کان پکڑ کر آئندہ کیلئے خواتین کو ہراساں نہ کرنے کا وعدہ کرنے پرچھوڑا گیا۔

کراچی میں نمائش پر امام بارگاہ حسینیاں ایرانیاں محرم کے دنوں میں مرکزی حیثیت اختیار کر جاتی ہے جہاں ہزاروں کی تعداد میں مرد و زن موجود ہوتے ہیں۔ 9 محرم کی رات جب جلوس نکالا جا رہا تھا تو ایسے میں کچھ منچلے نوجوان جلوس میں شریک خواتین کو ہراساں کرنے میں مصروف تھے۔ مقامی رضا کاروں کی نظر پڑی تو انہوں نے انہیں دھر لیا اور باقاعدہ معافی منگوانے کے بعد چھوڑا۔

باپ نے دودھ نہ پینے پر تین سالہ بیٹی کو گھر سے باہر کھڑے رہنے کی سزا دے دی، لیکن پھر وقتی غصہ عمر بھر کا پچھتاوا بن گیا، ایسا کیا ہوا؟ جانئے

سوشل میڈیا پر منظر عام پر آنے والی ویڈیو میں دیکھا جا سکتا ہے کہ چار نوجوانوں نے کان پکڑے ہوئے ہیں ۔ ایک لڑکا کیمرے کے روبرو اپنا جرم بتاتا ہے اور کہنا ہے کہ ”میں آج 9 محرم کو نمائش پر لڑکیاں چھیڑنے آیا تھالیکن یہاں پر مجھے رضا کاروں نے پکڑ لیا، اب میں کان پکڑ کر توبہ کرتا ہوں کہ دوبارہ ایسی غلطی کبھی بھی نہیں کروں گا، میرا سب لڑکوں کو پیغام ہے کہ ایسی حرکت نہ کریں کیونکہ یہاں کے رضا کار بہت چوکنا رہتے ہیں“۔

باقی تینوں لڑکوں نے آئندہ خواتین کو ہراساں نہ کرنے کا وعدہ کن الفاظ میں کیا ، جاننے کیلئے ذیل میں دی گئی ویڈیو دیکھیں۔

مزید :

کراچی -