’اس رات اس لڑکی نے میرے ساتھ ایسی شرمناک ترین حرکت کی کہ جب بھی سوچتا ہوں تو آنسو نکل جاتے ہیں کیونکہ۔۔۔‘ نوجوان لڑکے کے ساتھ لڑکی نے زبردستی وہ کام کردیا جو آج تک کسی لڑکی نے نہ کیا ہوگا

’اس رات اس لڑکی نے میرے ساتھ ایسی شرمناک ترین حرکت کی کہ جب بھی سوچتا ہوں تو ...
’اس رات اس لڑکی نے میرے ساتھ ایسی شرمناک ترین حرکت کی کہ جب بھی سوچتا ہوں تو آنسو نکل جاتے ہیں کیونکہ۔۔۔‘ نوجوان لڑکے کے ساتھ لڑکی نے زبردستی وہ کام کردیا جو آج تک کسی لڑکی نے نہ کیا ہوگا

  

ایڈنبرا(نیوز ڈیسک) خواتین کے ساتھ جنسی جرائم کی خبریں تو روز سامنے آتی ہیں لیکن سکاٹ لینڈ میں ایک بدقماش خاتون نے موقع پا کر ایک نوجوان پر ایسا بھیانک جنسی حملہ کر دیا کہ سوچ کر ہی انسان کے رونگٹے کھڑے ہو جائیں۔

ویب سائٹ دی مرر کے مطابق حیرتناک بدقسمتی کا یہ واقعہ فلمساز فرینک میک گوون کے ساتھ پیش آیا، جو اتفاق سے کافی نازک اندام واقع ہوئے ہیں۔ فرینک نے اس افسوسناک واقعے کی تفصیلات بتاتے ہوئے کہا، ”میں ایک گھر میں منعقد ہونے والی پارٹی میں شریک تھا۔ وہاں شیرل کورٹل نامی ایک خاتون سے میری ملاقات ہوئی۔ اس نے بہت زیادہ شراب پی رکھی تھی اور وہ مجھے ایک طرف آنے کو کہہ رہی تھی۔ جب میں اس کے پاس گیا تو مجھے پتا چلا کہ اس کا ارادہ ٹھیک نہیں تھا۔ میری ہچکچاہٹ سے وہ غصے میں آنے لگی، لیکن جب اسے پتا چلا کہ میں ہم جنس پرست ہوں تو وہ آگ بگولا ہو گئی۔ وہ مجھے نامرد، ناکارہ، گھٹیا اور نجانے کیا کیا کہہ رہی تھی۔ میں اس کے غصے سے بچنے کے لئے ساتھ واقع کچن میں چلا گیا۔ وہاں کچھ نیچے گرا تو میں اسے اٹھانے کے لئے جھکا ، اور اسی وقت شیرل میرے پیچھے کچن میں داخل ہوئی۔ اس نے مجھے جھکے ہوئے دیکھ کر پیچھے سے حملہ کر دیا۔ میری پتلون نیچے کھینچ کر اس نے اپنی انگلیوں کے ساتھ مجھے زیادتی کا نشانہ بنانا شروع کر دیا۔ میں نے اس کے شکنجے سے نکلنے کی بہت کوشش کی لیکن وہ مجھ سے زیادہ طاقتور تھی۔ شراب پینے کی وجہ سے وہ اور بھی وحشی ہو چکی تھی۔ میرے چیخنے چلانے کے باوجود اس نے اپنا سفاکانہ حملہ جاری رکھا۔ جب تک لوگ میری چیخیں سن کر مجھے بچانے آئے تو میرے جسم سے خون نکل رہا تھا اور میں درد سے بلبلا رہا تھا۔“

ماڈل کی تصویر جیسے ہی میگزین میں چھپی تو کہرام برپا ہو گیا، لوگوں نے ایک ایسی چیز دیکھ لی کہ دھمکیاں دینے لگے، ایسا کیا تھا؟ جانئے

فرینک کا کہنا ہے کہ اس واقعے نے ان کی زندگی برباد کر کے رکھ دی ہے۔انہوں نے اپنا جسمانی و نفسیاتی درد بیان کرتے ہوئے کہا، ”میں اکثر نیند سے بیدار ہو کر بیٹھ جاتا ہوں۔ اس کی وجہ سے صرف جسمانی درد ہی نہیں بلکہ میری روح پر لگنے والے زخم بھی ہیں۔ میں اب بھی گہرے خوف میں مبتلاءہوں۔ اکثر میں رات کو اکیلا بیٹھ کر سسکیاں بھرنے لگتا ہوں۔ اس واقعے کے بعد میری زندگی بالکل خالی اور نا امید ہو گئی ہے۔ “

ظالم خاتون شیرل پر گلاسگو کی عدالت میں جنسی حملے کے الزام کے تحت مقدمہ چلایا گیا۔ عدالت نے اسے 120 گھنٹوں کی کمیونٹی سروس کی سزا سنائی ہے، جبکہ اس کا نام جنسی مجرموں کے رجسٹر میں درج کرنے کا حکم بھی جاری کیا گیا ہے۔

مزید :

ڈیلی بائیٹس -