طالبان سے مذاکرات ہی سب سے بہتر راستہ ہے، افغان سفیر

طالبان سے مذاکرات ہی سب سے بہتر راستہ ہے، افغان سفیر

اسلام آباد(صباح نیوز) پاکستان میں افغان سفیر ڈاکٹرعمر زاخیلوال کا کہنا ہے کہ ایک افغان کی حیثت سے ان کا مقصد یہ ہونا چاہیے کہ افغان سرزمین پر کسی بیرونی فوج کی ضرورت نہ ہو، یہی طالبان کا مقصد بھی ہونا چاہیئے، افغان حکومت کے لیے طالبان سے مذاکرات ہی سب سے بہتر راستہ ہے۔ایک نجی ٹی وی پروگرام میں اظہار خیال کرتے ہوئے انہوں نے کہا کہ پاکستان مخالف ہونے اور پاکستان کی پالیسیوں پر تنقید میں فرق کرنا ہو گا۔ان کا کہنا تھا کہ وہ بھی پاکستان کی پالیسیوں پر تنقید کرتے ہیں لیکن وہ پاکستان مخالف نہیں، زلمے خلیل زاد ان کے دوست ہیں اورمیں نہیں سمجھتا کہ وہ پاکستان مخالف ہیں۔پاکستان سے خراب تعلقات کی قیمت پر بھارت سے قریب ہونا ایک اہم سوال ہے کیونکہ اگر افغانستان واقعی ایسا کرتا ہے تو اس کا مطلب ہو گا کہ ہم ایک پوری قوم کی عقل پر سوالیہ نشان لگا رہے ہیں۔ ہمیں منطقی انداز میں سوچنا ہو گا، ایک خود مختار ملک کی حیثیت سے افغانستان انڈیا سے قریبی تعلقات رکھ سکتا ہے تاہم پاکستان سے تعلقات کی قیمت پر ایسا نہیں ہو گا۔

افغان سفیر نے کہا کہ ہمیں بہت کھل کر بات کرنی چاہیئے، اگر پاکستان کے پاس کوئی ثبوت ہیں تو پاکستان کو حق ہے کہ وہ اس معاملے کو اٹھائے اور اس پر واضح جواب دینا افغانستان کی ذمہ داری ہے۔ان کا کہنا تھا کہ پاکستان کی سیکیورٹی یا خود مختاری کے خلاف بھارت سمیت کوئی بھی تیسرا ملک افغانستان کو استعمال نہیں کر سکتا۔ایک اور سوال کے جواب میں انہوں نے کہا کہ وہ افغانستان میں الیکشن کے بارے میں وقت آنے پر بتائیں گے کیونکہ ابھی اس پر کوئی بیان نہیں دینا چاہتے۔

افغان سفیر

مزید : علاقائی