قبرستان کی اراضی پر قبضہ برداشت نہیں،جسٹس علی اکبر قریشی

قبرستان کی اراضی پر قبضہ برداشت نہیں،جسٹس علی اکبر قریشی

لاہور(نامہ نگار خصوصی)لاہور ہائیکورٹ کے جسٹس علی اکبر قریشی کی عدالت میں پیش کی گئی قبرستان کمیٹی کی رپورٹ میں انکشاف کیا گیاہے کہ میانی صاحب قبرستان کی باغیچی شاہ چراغ میں 32مرلہ اراضی پر غیر قانونی طور پر لوگ قابض ہیں،جس پر فاضل جج نے متعلقہ افراد کو نوٹس جاری کرتے ہوئے قراردیا کہ قبرستان کی اراضی پر قبضہ کسی صورت برداشت نہیں ،گزشتہ روز عدالتی حکم پر سیکرٹری قبرستان کمیٹی نے رپورٹ پیش کی ،جس کے مطابق باغیچی شاہ چراغ میں قبرستان کی اراضی پر لوگوں نے گھر تعمیر کر رکھے ہیں،اس میں سے 32مرلہ اراضی قبرستان میانی صاحب کی ملکیت ہے ،اس حوالے سے نشاندہی کا عمل بھی مکمل ہوچکا ہے۔فاضل جج نے قرار دیا کہ قبرستان کی اراضی پر ایک انچ بھی قبضہ برداشت نہیں کریں گے ، جس پرمیانی صاحب قبرستان کے سیکرٹری نے عدالت کو بتایا کہ اراضی پر قبضہ کرنے والے افراد کو مطلع کرکے متعلقہ اراضی پر نشانات لگا دئیے گئے ہیں ،درخواست گزار کے وکیل حافظ خلیل احمد کا کہنا ہے میانی صاحب قبرستان کی اراضی پر بڑے پیمانے پر قبضے کیے گئے تھے جو عدالتی حکم پر وا گزار کروائے گئے تاہم 32مرلہ اراضی پر ابھی تک قبضے برقرارہیں۔عدالت نے متعلقہ افراد کونوٹس جاری کرتے ہوئے مزید سماعت16اکتوبر تک ملتوی کردی۔

جسٹس علی اکبر قریشی

مزید : صفحہ آخر