ججوں کے تقرر کا طریقہ کار تبدیل کرنے کیلئے درخواست کی سماعت ملتوی

ججوں کے تقرر کا طریقہ کار تبدیل کرنے کیلئے درخواست کی سماعت ملتوی

لاہور(نامہ نگار خصوصی)لاہور ہائی کورٹ میں اعلیٰ عدلیہ کے ججوں کے تقرر کا طریقہ کار تبدیل کرنے کے لئے دائر درخواست کی سماعت کے دوران مسٹر جسٹس عابد عزیز شیخ نے درخواست گزار کے وکیل اے کے ڈوگر کو مخاطب کرکے ریمارکس دیئے کہ ہو سکتا ہے آپ کی فیملی میں سے بھی کوئی جج ہو،(واضح رہے کہ اے کے ڈوگر کے داماد لاہور ہائی کورٹ کے جج ہیں)اس کیس میں اے کے ڈوگر ایڈووکیٹ کے دلائل جاری تھے کہ مزید سماعت 11دسمبر تک پر ملتوی کردی گئی ۔درخواست گزار ایم ایچ مجاہد کی طرف سے اے کے ڈوگر نے موقف اختیار کیا کہ انگلینڈ میں ججوں کی تقرری کے لئے درخواستیں طلب کی جاتی ہیں، پاکستان میں بھی اس پر عمل ہونا چاہیے،موجودہ طریقہ کار سے من پسند ججوں کا انتخاب کیا جاتا ہے،جس پر فاضل جج نے مذکورہ ریمارکس دیئے ،اے کے ڈوگر نے کہا کہ موجودہ طریقہ کار سے حصول انصاف کا عمل متاثر ہوتا ہے،قابل اور پڑھے لکھے وکلا ء جج نہیں بن سکتے،موجودہ طریقہ کار تبدیل کیا جا ئے،اعلیٰ عدلیہ میں ججوں کے تقرر کے لئے اخبارات میں اشتہار دیئے جائیں،جس وکیل کی پریکٹس 10سال کی ہو جائے وہ درخواست دینے کا اہل ہو ،ٹیسٹ اور انٹریو پاس کرنے والے وکلاء کو جج بھرتی کیا جائے۔

سماعت ملتوی

مزید : صفحہ آخر