مشرف سمیت تمام مطلوب افراد کی گرفتاری جلد یقینی بنائینگے ، حکومت

مشرف سمیت تمام مطلوب افراد کی گرفتاری جلد یقینی بنائینگے ، حکومت

اسلام آباد(سٹاف رپورٹر، مانیٹرنگ ڈیسک ، نیوز ایجنسیاں )حکومت نے سینٹ کو بتایاہے سابق صدر پرویز مشرف سمیت ملکی عدالتوں کو مطلو ب افراد کی گرفتاری کیلئے تمام اداروں کی مشاورت سے اقدامات کئے جائیں گے ،بیرون ممالک سے لوٹی ہوئی پاکستانی دولت کی وا پسی کیلئے ٹاسک فورس قائم ، وفاقی دارالحکومت سمیت ملک کے مختلف شہروں میں سرگرم انسانی سمگلنگ میں ملوث گروہوں کیخلاف موثر کارر و ائی شروع کردی ہے ،بیرون ممالک مقیم پاکستانیوں کو سفارتخانوں کے حوالے سے کافی شکایات ہیں جن کو دور کرنے کیلئے اقدامات کئے جا ر ہے ہیں ،قبائلی اضلاع سے تعلق رکھنے والے طلبہء کو اگلے 10سال تک داخلوں میں مختص کوٹہ دیا جائے گا،لیویز کو پولیس فورس میں تبدیل کرنے کیساتھ ساتھ قبائلی اضلاع کیلئے مزید پولیس فورس بھرتی کی جائے گی اور ان تمام عوامل پر ایوان بالا کو اعتماد میں لیا جائیگا ۔بدھ کے روز سینیٹ اجلاس میں وقفہ سوالات کے دوران سینیٹر چوہدری تنویر خان کے سوال کا جواب دیتے ہوئے وزیر مملکت داخلہ شہریار آفریدی کا مزید کہنا تھااسوقت دنیا کے 33ممالک کیساتھ پاکستان کا ملزمان کی واپسی کیلئے معاہدہ ہے، بیرون ممالک پاکستانیوں کی غیر قانونی دولت کے بارے میں تفصیلات مل چکی ہیں اور مزید مل رہی ہیں ، جس نے بھی ملکی قانون توڑا ہے اس کیخلاف اقدامات کئے جائیں گے، سابق وز یر اعظم شوکت عزیز کی پاکستان حوالگی کے بارے میں ابھی تک کسی بھی ادارے کی جانب سے کوئی درخواست نہیں دی گئی ،سینیٹر بہرہ مند تنگی کے سوال پر وزیر مملکت نے بتایاانسانی سمگلنگ کی وجہ سے پاکستان کی دنیا بھر میں بدنامی ہورہی ہے ، بدقسمتی سے تفتان اور ہلمند سے منسلک پاکستانی بارڈر پر نگرانی کا موثر نظام نہ ہونے کی وجہ سے یہ علاقہ انسانی سمگلنگ کی آماجگاہ بن چکا ہے، ایف آئی ا ے کے پاس وسائل محدود جبکہ انسانی سمگلنگ میں ملوث عناصر بے پناہ طاقتور ہیں ، تاہم ان کیخلاف کارروائی شروع کردی گئی ہے، کریمنل جسٹس سسٹم کی کمزوری کی وجہ سے جرائم پیشہ عناصر بہت طاقتور ہوگئے ہیں اور انہیں قانون کے شکنجے سے کسی قسم کا خوف نہیں آتا ، بیرون ممالک مقیم پاکستانیوں کو شناختی کارڈ کے حصول میں درپیش مشکلا ت کی وجہ سفارتخانوں میں اہلیت کی بجائے سفارش پر کی گئی بھرتیاں ہیں تاہم اصلاح احوال کے اقداما ت کئے جا رہے ہیں ۔ سینیٹر بہرہ مند تنگی کے ایک اور سوال کا جواب وزیر مملکت پارلیمانی امور علی محمد خان نے دیتے ہوئے کہا قبائلی اضلاع میں بحالی کیلئے ٹاسک فو رس قائم کیا گیا ہے اگلے 5سالوں تک قبائلی سینیٹر اور ممبران قومی اسمبلی اپنے عہدوں پر برقرار رہیں گے، قبائلی اضلاع میں ٹیکس رعایتیں د ی گئیں ہیں ۔ ملک میں نشے کے عادی افراد کی تعداد بہت زیادہ جبکہ بحالی کیلئے مراکز نہ ہونے کے برابر ہیں ، ملک میں گدا گر و ں کے بڑے بڑے گروہ کام کر رہے ہیں ان کیخلاف کارر وائی کی جائے گی ۔سینیٹر زچوہدری تنویر خان اور عائشہ رضافاروق کے سوالات کے جواب میں وفاقی وزیر ریلوے شیخ رشید احمد نے بتا یا پاکستان ریلوے میں 75سال سے زائد عمر کے افراد کو مفت سفری سہولیت دینے کا فیصلہ سیاسی فائدہ حاصل کرنے کیلئے نہیں کیا گیا ،ریلو ے کی اکانومی کلاس میں ٹکٹ مزید کم کئے جائیں گے ، ریلوے کے موجودہ ٹریکس ایم ایل ون اور ایم ایل ٹو کو اپ گریڈ کیا جارہا ہے ،بیرون ممالک مقیم پاکستانی ریلوے کی اپ گریڈیشن میں بھرپور دلچسپی کا مظاہرہ کر رہے ہیں ، نابینا شخص کیساتھ ایک مددگار بھی 50فیصد رعایتی ٹکٹ پر سفر کر سکے گا ۔

حکومت

مزید : صفحہ آخر