جامعہ زکریا پی ڈی ونگ ، پراجیکٹ ڈائریکٹر ’’کرپشن میں پی ایچ ڈی ‘‘ کیلئے بے قرار ، یونیورسٹی میں چہ میگو ئیاں

جامعہ زکریا پی ڈی ونگ ، پراجیکٹ ڈائریکٹر ’’کرپشن میں پی ایچ ڈی ‘‘ کیلئے بے ...

ملتان ( سپیشل رپورٹر) بہاؤ الدین زکریا یونیورسٹی میں مطلوبہ تعلیمی قابلیت کے بجائے سیا سی اثر و رسوخ پر براجیکٹ ڈائریکٹر تعینات ہونے والے ملک رفیق ہمڑ نے نئے پاکستان میں داخل ہوتے ہی یونیورسٹی میں جاری مختلف ترقیاتی منصوبوں (بقیہ نمبر10صفحہ12پر )

میں مبینہ طور پر کمشن کی شرح میں 5فیصد اضافہ کرتے ہوئے ٹھیکداروں کو اپنے والد کی برکس کمپنی سے اینٹیں خریدنے کا نادر شاہی حکم جاری کردیا ہے ۔بلوں کی ادائیگی کمشن سے مشروط کردی،ٹھیکداروں میں تشویش کی لہر دوڑ گئی ۔ذرائع کے مطابق بہاؤ الدین زکریا یونیورسٹی یونیورسٹی کے شعبہ پی ڈی ونگ کے پراجیکٹ ڈائریکٹر ملک رفیق ہمڑ کے بارے میں معلوم ہوا ہے کہ سابق وائس چانسلر خواجہ علقمہ کے دور میں بطور الیکٹرونکس انجینئر بھرتی ہوا اور بعدازاں سیاسی اثرورسوخ استعمال کرتے ہوئے پی ڈی ونگ میں بطور پراجیکٹ ڈائریکٹر تعینات کردیا گیا حالانکہ مذکورہ پوسٹ کیلئے سول انجینئر ہونا کی شرط لازمی ہے مذکورہ پراجیکٹ ڈائریکٹر نے حال ہی میں نئے پاکستا ن کی حکومت میں یونیورسٹی میں جاری مختلف ترقیاتی منصوبوں پرکام کرنے والی ٹھیکدار کمپنیوں کو بلوں کی ادائیگیوں کیلئے کمشن کی شرح میں مبینہ طور پر5فیصد تک کا اضافہ کردیا ہے جبکہ ترقیاتی منصوبوں میں استعما ل ہونے والی انیٹوں کی خریداری بھی ملتان کے مضافاتی علاقے شیر شاہ ، گاگراں میں قائم اپنے والد ملک نبی ہمڑ کی برکس کمپنی سے مشروط کردی ہے اس ضمن میں قابل ذکر بات یہ ہے کہ اہلیت کے برعکس پراجیکٹ ڈائریکٹر تعینات ہونے والے ملک رفیق ہمڑ کا تعلق یونیورسٹی میں چیف انجینئر طاہر سلطان گروپ سے ہے جن پر پہلے ہی نیب میں کرپشن کی تحقیقات جاری ہے جبکہ موصوف کے والد ملک نبی بخش ہمڑ شیر شاہ آئل ڈپو کے علاقے میں دونمبر آئل مافیا کے حوالے سے بری شہر ت کے حامل سمجھے جاتے ہیں اس ضمن میں یونیورسٹی میں مختلف ٹھیکدار کمپنیوں سمیت یونیورسٹی حلقوں نے مذکورہ صورتحال پر تشویش کا اظہار کرتے ہوئے گورنر و چانسلر چوہدری محمد سرور ،وائس چانسلر سمیت ارباب اختیار سے مذکورہ صورتحال کا فوری نوٹس لیتے ہوئے سخت کاروائی کا مطالبہ کیا ہے ۔ جبکہ ٹھیکیداروں نے احتجاج کا اعلان کردیا ہے۔

مزید : ملتان صفحہ آخر