آئی جی پی کے زیر صدارت فاٹا کے انضمام کے حوالے سے اعلٰی سطحی اجلاس

آئی جی پی کے زیر صدارت فاٹا کے انضمام کے حوالے سے اعلٰی سطحی اجلاس

پشاور(کرائم رپورٹر) انسپکٹر جنرل آف پولیس خیبر پختونخوا صلاح الدین خان محسود نے پولیس حکام کو ہدایت کی ہے کہ وہ فاٹا میں پولیسنگ متعارف کرانے کے لیے اپنا ہوم ورک جلد از جلد مکمل کرلیں۔یہ ہدایات انہوں نے آج سنٹرل پولیس افس پشاور میں اعلیٰ پولیس حکام کے ایک اجلاس کی صدارت کرتے ہوئے جاری کیں۔ ایڈیشنل آئی جی ہیڈ کوارٹرز ، ڈی آئی جی آپریشنز، ڈی آئی جی ہیڈ کوارٹرز، ڈی آئی جی سی ٹی ڈی اور ایس ایس پی سپیشل برانچ نے اجلاس میں شرکت کی۔ اس موقع پر قبائلی علاقوں میں مرحلہ وار پولیسنگ شروع کرنے کے مختلف پہلوؤں کا تفصیلی جائیزہ لیا گیا اور اس ضمن میں شرکاء اجلاس کو جامع حکمت عملی تیار کرکے اس کو فوری عملی جامہ پہنانے کی ہدایت کی گئی۔ شرکاء کو قبائلی اضلاع میں پولیسنگ سے متعلق اقدامات کے لیے تمام اسٹیک ہولڈرز اور مقامی لوگوں کو اعتماد میں لینے اور وہاں پر قبائلی روایات اور ضروریات کے عین مطابق جدید پولیسنگ متعارف کرانے کی بھی ہدایت کی گئی۔اس موقع پر فاٹا کو خیبر پختو نخوا میں ضم کرنے کے لیے محکمہ پولیس کے مختلف یونٹوں کی مختلف کمیٹیاں تشکیل دی گئیں۔ان علاقوں میں کاؤنٹر ٹیرارزم ڈیپارٹمنٹ، ایلیٹ فورس اور دیگر یونٹس قائم کئے جائینگے۔ 13نئے پولیس لائنز، 95پولیس اسٹیشنز اور 190 پولیس پوسٹ کا قیام عمل میں لایا جائے گاجبکہ فورس کی تعداد 45ہزار ہوگی اور 22ہزار نئے اہلکار بھی بھرتی کئے جائیں گے۔ کمیٹیوں کے چیئرمینوں کو اپنے اپنے کمیٹیوں کا اجلاس منعقد کرکے سابقہ قبائلی اضلاع میں پر امن طریقے سے پولیسنگ متعارف کرانے کی ہدایت کی گئی۔ متعلقہ کمیٹیوں کو پہلے سے طے شدہ قواعد و ضوابط پر غور و خوض کرکے اسے حالات اور وقت کے تقاضوں کے مطابق ڈال کر تفصیل کے ساتھ پیش کرنے کی بھی ہدایت کی گئی۔

مزید : پشاورصفحہ آخر