پولیس نے جانوں کی قربانی دیکر ضلع کو امن کو گہوارہ بنایا : ڈی آئی جی چارسدہ

پولیس نے جانوں کی قربانی دیکر ضلع کو امن کو گہوارہ بنایا : ڈی آئی جی چارسدہ

چارسدہ (بیو رو رپورٹ) ڈی آئی جی مردان محمد علی خان گنڈا پور نے کہا ہے کہ چارسدہ پولیس نے محدود وسائل کے باوجود بے بناہ قربانیاں دے کر ضلع کو امن کا گہوارہ بنایا ہے۔ باچا خان یونیورسٹی ، تنگی اور شبقدر کچہر یوں پر دہشت گردوں کے حملوں میں چارسدہ پولیس نے بہادری کی داستان رقم کی ہے ۔ ڈی آر سی اور منتخب عوامی نمائندوں کی بھر پور معاونت سے تھانہ اور کچہری پر بوجھ کم ہو چکا ہے ۔ عوام کی جان و مال کی خفاظت پولیس کی اولین ذمہ داری ہے ۔ محکمہ پولیس میں سزا اور جزا کے مثبت نتائج برآمد ہو رہے ہیں۔ وہ ڈسٹرکٹ کونسل ہال چارسدہ میں ضلع کونسل ممبران ،ڈی آر سی ممبران اور پولیس دربار سے خطاب کر رہے تھے ۔ اس موقع پر ضلع ناظم فہد ریاض خان ،سپیکر حاجی مصور شاہ ، ڈی پی او چارسدہ عرفان اللہ خان ، ایس پی انوسٹی گیشن نذیر خان ،تمام سرکل ڈی ایس پیز اور ایس ایچ اوز سمیت میڈیا اور تاجر تنظیموں کے نمائندگان بھی موجود تھے۔ضلع ناظم فہد ریا ض نے ڈسٹرکٹ کونسل کی طرف سے ڈی آئی محمد علی خان گنڈا پور کو شیڈل پیش کیا جبکہ ضلع کونسل کی طرف سے ڈسٹرکٹ پولیس آفیسر چارسدہ عرفان اللہ خان ،ایس پی انوسٹی گیشن چارسدہ نذیر خان ، ڈی ایس پی سٹی بشیر احمد خان یوسفزئی ، ڈی ایس پی سی ٹی ڈی عطاء محمد خان کو شیلڈ جبکہ ایس ایچ او سٹی جوہر شید خان ، ایس ایچ او نستہ سمیع اللہ خان ، ایس ایچ او سرڈھیری افتخار خان ، ایس ایچ او صفدر الرحمن خان ، ایس ایچ او بٹگرام ابراہیم شاہ خان ، انچارج چوکی سردریاب بہرمند شاہ خان اور انچار جمال خان کوتوصیفی سرٹیفیکیٹ دئیے گئے ۔قبل ازیں چارسدہ پہنچنے پر ڈی آئی جی کو پولیس کے چاق و چوبند دستے نے سلامی پیش کی ۔ ڈی آئی جی نے زیر تعمیر پولیس لائن کا بھی دورہ کیا ۔ اپنے خطاب میں ڈی آئی جی محمد علی خان گنڈا پور نے پولیس جوانوں کے مسائل و مشکلات حل کرنے کی یقین دہانی کرائی اور کہا کہ پولیس حکام تھانوں میں عوام سے بہترین رویہ اپنائے تاکہ پولیس پر عوام کا اعتماد بحال ہو ۔ انہوں نے کہا کہ عوام کی جان و مال کی خفاظت پولیس کی اولین ذمہ داری ہے اور اس پر کوئی سمجھوتہ نہیں کیا جائیگا۔ انہوں نے کہا کہ جرائم کی بیخ کنی کیلئے منتخب عوامی نمائندوں اور عمائدین علاقہ سے پولیس حکام قریبی روابط رکھیں کیونکہ عوام کے تعاون کے بغیر جرائم کی بیخ ممکن نہیں۔ پولیس ایکٹ 2017 ؁ء میں پولیس فورس ہر قسم کی سیاسی مداخلت سے پاک ہو چکی ہے اور براہ راست عوام الناس کو جواب دہ ہیں ۔انہوں نے مزید کہا کہ چارسدہ پولیس نے محدود وسائل کے باوجود بے بناہ قربانیاں دے کر ضلع کو امن کا گہوارہ بنایا ہے۔ باچا خان یونیورسٹی ، تنگی اور شبقدر کچہر یوں پر دہشت گردوں کے حملوں میں چارسدہ پولیس نے بہادری کی داستان رقم کی ہے ۔ ڈی آر سی اور منتخب عوامی نمائندوں کی بھر پور معاونت سے تھانہ اور کچہری پر بوجھ کم ہو چکا ہے ۔ عوام کی جان و مال کی خفاظت پولیس کی اولین ذمہ داری ہے ۔ محکمہ پولیس میں سزا اور جزا کے مثبت نتائج برآمد ہو رہے ہیں۔ غفلت کے مرتکب کو سزائیں اور اعلی کار کر دگی کے حامل پولیس جوانوں و افسران کو پرو موشن اور انعامات دئیے جا رہے ہیں۔ ڈی آئی جی نے متحدہ شاپ کیپرز فیڈریشن کے صدر حکیم اللہ کے بیٹوں سے دن دہاڑے 46لاکھ روپے چھیننے اور ملزمان کی عدم گرفتاری کے حوالے سے تاجر رہنماؤں کو یقین دلایا کہ اس حوالے سے جنگی بنیادوں پر اقدامات کئے جائینگے اور ملزمان کو ہر صورت قانون کے کٹہرے میں لایا جائیگا۔

مزید : پشاورصفحہ آخر