ضمنی الیکشن کے موقع پر سیکیورٹی اقدمات کو غیر معمولی بنایا جائے :آئی جی سندھ

ضمنی الیکشن کے موقع پر سیکیورٹی اقدمات کو غیر معمولی بنایا جائے :آئی جی سندھ

کراچی (کرائم رپورٹر)آئی جی سندھ ڈاکٹرسید کلیم امام نے صوبے کے مختلف اضلاع میں ہونیوالے ضمنی انتخابات کے موقع پر پولیس سیکیورٹی اقدامات کے حوالے سے ایڈیشنل آئی جی کراچی،زونل ڈی آئی جیز ایسٹ، ویسٹ ،ساؤتھ کراچی اورسکھر پولیس رینج کے ڈی آئی جی سے ہونیوالے ویڈیو کانفرنسنگ اجلاس کی صدارت کی ۔اس موقع پر اے آئی جی ایڈمن بھی موجود تھے ۔دوران اجلاس تمام ڈی آئی جیز نے متعلقہ علاقوں میں امن وامان کی صورتحال اور اس حوالے سے پولیس اقدامات سمیت ضمنی انتخابات سیکیورٹی کے مجموعی امور پر علیحدہ علیحدہ بریفنگ دی۔آئی جی سندھ نے کہا کہ قومی اور صوبائی اسمبلی کی نشستوں پر منعقدہ ضمنی انتخابات کے موقع پر سیکیورٹی کے مجموعی اقدامات کو درجہ بندیوں میں تقسیم کرکے تمام تر حفاظتی امور کو انتہائی ٹھوس اور مؤثر بنایا جائے ۔انہوں نے کہا کہ تمام اور باالخصوص ممکنہ حساس پولنگ اسٹیشنوں کے اندرونی حصوں اور اطراف سمیت دیگر ضروری پوائنٹس پر پولنگ کے عمل کے آغاز سے قبل ٹیکنیکل سوئیپنگ اور کلیئرنس جیسے اقدامات کو بھی یقینی بنایا جائے ۔انہوں نے کہا کہ پولنگ اسٹاف سمیت مجموعی پولنگ میٹیرئیل کے حفاظتی امور کو ہرسطح پر ناصرف ٹھوس بلکہ اس حوالے سے رینجرز سندھ اورقانون نافذ کرنیوالے دیگر اداروں سے بھی روابط کو مضبوط اور پائیدار بنایا جائے تاکہ مشترکہ سیکیورٹی حکمت عملی اور لائحہ عمل سے پولنگ کے جملہ مراحل کو انتہائی محفوظ اور پرامن بنایا جاسکے ۔آئی جی سندھ کا کہنا تھا کہ علاقائی سطح پر منعقدہ کارنر میٹنگز اور ممکنہ طور پر برآمد ہونیوالی ریلیوں کی سیکیورٹی کے حوالے سے مختلف کمیونٹیز معززین علاقہ معروف سیاسی مذہبی اور سماجی شخصیات سے باقاعدہ رابطہ کیا جائے اور انکی تجاوہز مشاورت اور تمام تر تعاون کی بدولت پرامن الیکشن کے انعقاد کے عمل کو یقینی بنایا جائے ۔انہوں نے کہا کہ ضمنی انتخابات سیکیورٹی ڈپلائمنٹ کو ناصرف مکمل بریفنگ دی جائے بلکہ انھیں پانی اور طعام جیسی سہولیات کی ڈیوٹی پوائنٹس پر فراہمی جیسے اقدامات کو بھی یقینی بنایا جائے ۔انہوں نے کہا کہ صوبائی سطح پر جرائم کے خلاف جاری جنگ اور آپریشنز کو تیز تر کیا جائے اور ملوث ملزمان کے خلاف ہرسطح پربلاتفریق وامتیاز کاروائیوں کو یقینی بناتے ہوئے انھیں کیفرکردار تک پہنچایا جائے ۔

B

مزید : راولپنڈی صفحہ آخر