کان کنوں کی پنشن بھی دیگر پنشنرز کی طرح کی جائے،راسعیدخٹک

کان کنوں کی پنشن بھی دیگر پنشنرز کی طرح کی جائے،راسعیدخٹک

چوآسیدن شاہ (نمائندہ پاکستان)پاکستان مائن ورکرز فیڈریشن (رجسٹرڈ ) کے مرکزی چیئرمین راسعید خٹک نے کہا ہے کہEOBIکو وفاق کے پاس رکھا جائے حکومتی ارکان اور چیئرمین سینٹ صادق سنجرانی کے کان کنوں کی حمایت کرنے پر شکریہ ادا کرتے ہیں ملک میں دوہرا معیار ہمیں قبول نہیں کان کنوں کی پنشن بھی دیگر پاکستانی پنشنرز کی طرح5250روپے کی بجائے 10ہزار روپے کی جائے۔انھوں نے یہ بات اپنے دفتر میں پریس کانفرنس میں کہی جس میں مائنز کے کان کنان محمد منان،عثمان خان،عدنان ختک اور دیگر بھی مائن مزدورں بھاری تعداد میں شریک تھے اس موقعہ پر راسعید خٹک نے کہا کہ آج بھی مکڑوال اور سرگودھا میں مائنز حادثات میں دو کان کن شہید ہوگئے جن کی قربانیاں رنگ لائیں گی انھوں نے بتایاکہ صوبوں کے پاس EOBIکو رکھنے سے کان کنوں کی سروس (ملازمت) متاثر ہوگی کیونکہ کان کن(مائن ورکرز) ملک کے تمام صوبوں میں کام کرنے کے لئے حرکت کرتے ہیں اس لئےEOBIکو وفاق کے پاس رکھا جائے اورہزاروں فٹ زندہ درگور ہوکرکوئلہ ودیگر معدنیات نکالنے والے محب وطن کان کنان کی مدت ملازمت 10سال اور عمر کی حد55سال رکھی جائے ایک ملک میں دوہرا معیار ہمیں قبول نہیں کان کنوں کی پنشن بھی دیگر پاکستانی پنشنرز کی طرح5250روپے کی بجائے 10ہزار روپے کی جائے۔ راسعید خٹک نے کہا کہ فیڈریشن ھذا اس وقت ملک میںEOBIکے سلسلہ میں چلنے والی تمام تنظیموں کی مکمل حمایت کرتی ہے حکومت فوری طور پر 95%کان کنوں جو ابھی تک EOBIمیں رجسٹرڈ نہیں ہے اور بمشکل5%رجسٹرڈ ہے تمام کان کنوں کوEOBIمیں رجسٹرڈ کرنے کے فوری اقدامات اُٹھائے اور EOBIسے فوری طور پر کرپشن ختم کی جائے اور اہل ،ایماندار ااور خدا ترس افسران کو تعینات کیاجائے اور تمام پینڈنگ کیس فوری فیصلہ کان کنان کو پنشن کا مکمل حق دیا جائے۔

مزید : راولپنڈی صفحہ آخر