ملک میں پانی اور بجلی کا بحران شدت اختیار کرگیا ہے، امتیاز شیخ

ملک میں پانی اور بجلی کا بحران شدت اختیار کرگیا ہے، امتیاز شیخ

کراچی (اسٹاف رپورٹر) صوبائی وزیر توانائی امتیازاحمدشیخ نے کہا کہ ملک میں پانی اور بجلی کا بحران شدت اختیار کرگیا ہے، کالا باغ ڈیم پر بحث فضول ہے، تین صوبے اس منصوبے کو مسترد کرچکے ہیں ملک میں نئے ڈیم تمام صوبوں کی مشاورت اور رضامندی سے بنانے کی ضرورت ہے،یہ بات انہوں نے این ای ڈی یونیورسٹی میں پانی اور متبادل توانائی کی کانفرنس سے خطاب کرتے ہوئے کہی،صوبائی وزیر نے کہا پانی کے بغیر زندگی ناممکن ہے اور بجلی کے بغیر زندگی نامکمل ہے، جس تناسب سے پاکستان کی آبادی میں اضافہ ہو رہا ہے,پانی اور بجلی کے وسائل ناکافی ہیں، ملک میں اس وقت بجلی کا سنگین بحران موجودہے ۔مستقبل قریب میں سندھ ناصرف صوبے کی بجلی کی ضروریات پوری کرے گا بلکہ پورے ملک کو بجلی فراہم کرنے میں اہم کردار ادا کریگا، انہوں نے کہا کہ سندھ متبادل توانائی کے شعبہ میں اپنا کردار بخوبی ادا کر رہاہے،صوبہ میں متبادل توانائی کے زخائر موجود ہیں،توانائی کے مختلف سیکٹرز پر تیزی سے کام ہو رہا ہے،صوبائی حکومت این ای ڈی یونیورسٹی اور توانائی کے شعبے میں دلچسپی رکھنے والے تمام اداروں کو ہر ممکن تعاون فراہم کریگی،امتیاز شیخ نے کہا کہ وفاق سے ہماری اپیل ہے کہ 91 کے معاہدے کے تحت سندھ کو اس کے حصے کا پانی فراہم کیا جائے،سندھ کے حصے کا پانی آج بھی چوری کیا جارہا ہے،کالا باغ مردہ گھوڑاہے لہذا اس پر بحث غیرضروری ہے بھاشا ڈیم کے معاملے پر بھی ابھی تک صوبوں کو اعتماد میں نہیں لیا گیا،بڑے ڈیم کو بنانے کے لئے قومی اتفاق رائے ضروری ہے،وگرنہ دیگر تین صوبے ڈیم اشو پر عدم تحفظ کا شکار رہیں گے۔

مزید : راولپنڈی صفحہ آخر