خیبر ،قبائلی علاقوں میں تعلیم کی سہولتیں نہ ہونے کے برابر

خیبر ،قبائلی علاقوں میں تعلیم کی سہولتیں نہ ہونے کے برابر

خیبر (عمران شنواری)قبائلی علاقہ جات میں تعلیم کے حوالے سے حکومت کے دعوے غلط ثابت ہو رہے ہیں سہولیات کی عدم دستیابی کے باعث زیا دّہ تر طلباء تعلیم آگے حاصل کرنے میں ناکام ہو تے ہیں قبائلی علاقہ جا ت میں غربت اور بے روزگا ری سے والدین اپنے بچوں کو پر ائیویٹ سکولوں اور کالجز میں تعلیم نہیں دلوا سکتے لیکن قبائلی علاقہ جات کے وہ طلباء جو اعلی تعلیم حاصل کرنا چاہتے ہیں تو انکے لئے ملک کے اعلی تعلیمی درسگاہوں میں یا تو کوٹہ سسٹم نہیں ہیں اگر بعض تعلیمی درسگا ہوں نے کوٹہ سسٹم مقرر کیا ہیں تو وہ اتنا کم ہیں جس سے قبائلی علاقوں سے تعلق رکھنے والے سینکڑوں طلباء رہ جا تے ہیں اور وہ آگے تعلیم حاصل کرنے سے محروم ہو جا تے ہیں ملک کی دوسرے تعلیمی درسگا ہوں کے علاوہ ملٹری کالجز میں قبائلی طلباء کیلئے کوٹہ بہت کم یا بعض میں بلکل مقرر نہیں کیا ہیں اسی طرح پی اے ایف کالج سرگودھا ،پی اے ایف کالج لوئر ٹاپ ،کیڈٹ کالج حسن ابدال میں کوئی کوٹہ سسٹم قبائلی طلباء کیلئے نہیں مقرر کیا ہیں ملٹری کالج جہلم میں قبائلی علاقوں کے طلباء کیلئے صرف تین سیٹیں مقرر کر دئیے گئے ہیں اسی طرح ملٹری کالج مری اور ملٹری کالج سوئی میں بھی تین ،تین سیٹیں مقرر کر دی گئی ہیں جو بہت زیا دہ کم ہیں کیڈ ٹ کالج وانا میں 70 فیصد سیٹیں مقامی طلبا ء کیلئے مختص کئے گئے ہیں جبکہ تمام اضلا ع کے طلباء کیلئے صرف 5فیصد سیٹیں مقرر کئے گئے ہیں اور 25فیصد دوسرے علاقوں کیلئے مختص کئے گئے ہیں کیڈت کالج سپینکئی میں بھی 70فیصد مقامی طلباء کیلئے 5فیصد دوسرے اضلاع کے طلباء کیلئے اور 25فیصد دوسرے علاقوں سے تعلق رکھنے والے طلباء کیلئے مختص کئے گئے ہیں اسی طرح کیڈت کالج رزمک نے ہراضلاع کیلئے 9اور8سیٹیں مقررکئے ہیں جبکہ نیوی کالج ورمرہ میں قبائلی طلباء کیلئے کوئی کوٹہ سسٹم نہیں مقرر کیا ہیں اس سلسلے میں کرم ایجنسی سے تعلق رکھنے والے ملک حاجی سلیم خان ،سینئر استاد اور جنرل سیکٹری کرم ایجوکیشنل ٹرسٹ حضرت گل ،پاکستان تحریک انصاف کے سینئر رہنماء حفیظ اللہ ،خیبر اضلاع سے تعلق رکھنے والے ملک عبدلرزاق آفریدی ،ملک خالد خان آفریدی ،ملک صلاح الدین کوکی خیل نے آرمی چیف ،وزیر اعظم عمران خان اور گورنر خیبر پختونخوا سے مطالبہ کیا ہے کہ قبائلی طلباء کیلئے پی اے ایف ،ملٹری کیڈٹ اور نیول کیڈٹ کالجز میں کوٹہ سسٹم زیا دہ کیا جائے اور جن کالجز میں کوٹہ سسٹم نہیں ہیں اس میں کوٹہ مقرر کیا جائے تاکہ قبائلی طلباء بھی ملک کے بہترین تعلیمی درسگا ہوں میں تعلیم حاصل کر سکے

مزید : کراچی صفحہ اول