جندول ،سابق سٹیٹ ملازمین کا دھرنا ختم ،قومی جرگہ تشکیل دیا جائیگا

جندول ،سابق سٹیٹ ملازمین کا دھرنا ختم ،قومی جرگہ تشکیل دیا جائیگا

جندول(نمائندہ پاکستان ) سابق سٹیٹ ملازمین کا دس روز سے جاری دھرنہ ختم ،تنازعہ حل کرانے کیلئے قومی جرگہ تشکیل دیا جائے گا، سیاسی جرگہ کے مشران نے ڈپٹی کمشنر سرمد سلیم اکرم اور سابق سٹیٹ ملازمین کے درمیان جاری غلط فہمیاں دور کر دی ۔ تفصیلات کے مطابق سابق سٹیٹ ملازمین نے ڈپٹی کمشنر کے رویہ کے خلاف اور ملازمین کے زیر قبضہ آراضیات کو 1974شیخ رشید لینڈ کمیشن فیصلہ کے مطابق الاٹمنٹ اور تعمیرات کی مسماری کے خلاف ڈپٹی کمشنر کے دفتر کے سامنے احتجاجی کیمپ لگا کر دھرنہ شروع کیا تھا ۔ اس سلسلہ میں وزیر اعلیٰ محمود خان نے ایم این اے محمد بشیر خان کی سربراہی میں ممبران صوبائی اسمبلی شفیع اللہ خان، ہمایون خان ، اعظم خان ،ملک لیاقت علی خان اور حاجی بہادر خان کا جرگہ تشکیل دیا تھا جرگہ میں ضلعی ناظم محمد رسول خان ،تحصیل ناظم منڈہ ہمایون خان اور ضلعی کونسلر حاجی عنایت اللہ خان بھی شام تھے جنہوں نے ڈپٹی کمشنر اور ملازمین کے غلط فہمیاں دور کر دی ۔ جرگہ مشران اور ڈپٹی کمشنر سرمد سلیم اکرم نے دھرنہ میں شریک ہوکر جرگہ کے شرکاء سے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ انیں عوام کی خدمت کیلئے تعینات کیا گیا ہے اور عوام کیساتھ کچھ بھی برا کرنے کا سوچ بھی نہیں سکتے انہوں نے کہا کہ مذکورہ آراضیات کیس میں ان سے جتنا ممکن ہو سکے گا قانونی دائرہ میں رہ کر وہ عوام کے صف میں کھڑے ہونگے ۔ اس موقع پر سٹیٹ ملازمین کے ضلعی صدر ملک عبد الستار خان اور جنرل سیکرٹری سربلند خان نے بھی خطاب کرتے ہوئے کہا کہ انہیں منتخب ممبران اور صوبائی حکومت پر یقین ہے اس لئے ممبران اسمبلی کے کہنے پر دھرنہ ختم کیا جا رہا ہے تاہم اگر ان کا مسئلہ حل نہ ہوا تو دوسرا احتجاج مین روڈ بلاک کر کے کیا جائے گا ۔ اس موقع پر ایم این اے محمد بشیر خان نے آراضیات کا مسئلہ مستقل طور پرحل کرانے کیلئے جرگہ تشکیل دینے کا اعلان کیا اور کہا کہ مسئلہ کا حل قومی سطح پر حل کرا کے عدالتی کیسز بھی ختم کرا دینگے ۔

مزید : کراچی صفحہ اول