ڈیرہ ،ہائیکورٹ اور ڈسٹرکٹ بار کا آج عدالتی بائیکاٹ اور دھرنے کا اعلان

ڈیرہ ،ہائیکورٹ اور ڈسٹرکٹ بار کا آج عدالتی بائیکاٹ اور دھرنے کا اعلان

ڈیرہ اسماعیل خان ( بیورورپورٹ)گو مل یونیورسٹی کے وائس چانسلر ڈاکٹر محمد سرور اور قائم مقام رجسٹرار دل نواز کی ملی بھگت سے یونیورسٹی میں ہونے والی کرپشن اقربا پروری غیرقانونی اور غیر اخلاقی سرگرمیوں پر حکومت کی جانب سے عدم توجہی برتنے پر ڈسٹرکٹ بار اور ہائی کورٹ بار نے جمعرات 11 اکتوبر کو عدالتی بائیکاٹ اور احتجاجی دھرنے کا اعلان کر دیا یہ اعلان گومل یونیورسٹی بچاو تحریک کے زیراہتمام مقامی میرج لان میں ہونے والی آل پارٹیز کانفرنس کے موقع پر وکلا برادری کے رہنماں صدر جمال عبدالناصر جنرل سیکرٹری ملک احسان الحق ایڈوکیٹ اور دیگر رہنماؤں نے کیا آل پارٹیز کانفرنس کی میزبانی کنوینئر زاہدمحب اللہ ایڈوکیٹ نے کی کانفرنس سے معروف عالم دین مولانا قاری خلیل احمد سراج رکن صوبائی اسمبلی پی پی پی کے راہنما احمد کریم کنڈی جمعیت علما اسلام کے تحصیل امیر مولانا قاری اعجاز احمد فاروقی سینئر کالم نگار و صحافی محمد سلیم قریشی سرائیکی رہنما ملک خضر حیات ڈیال مسلم لیگ نون کے جنرل سیکرٹری چودھری ریاض ایڈووکیٹ خاکسار تحریک کے رہنما اللہ دتہ ساجد عوامی نیشنل پارٹی کے شہاب خان ایڈوکیٹ نیشنل لیبر فیڈریشن کے عقیل ڈومرہ مرکزی تاجر اتحاد کے حاجی خالد ناز کونسلر اتحاد کے ملک اشفاق چغتائی جمعیت علماء پاکستان کے فقیر شیر محمد تنظیم اساتذہ کے عطااللہ جان اور گومل یونیورسٹی اکیڈمک اسٹاف ایسوسی ایشن کے صدرمحمد شعیب گنگوہی مسیحی راہنما جوزف بہادر۔بشیر چیرمین واپڈا یونین سمیع اللہ لیبر یونین پی ٹی سی ایل اور دیگر مقررین نے بھی اس موقع پر خطاب کیا جبکہ تمام مکاتب فکر سے تعلق رکھنے والے معززین کی بڑی تعداد اس موقع پر موجود تھی مقررین نے کہا کہ گومل یونیورسٹی میں کرپشن کی انتہا کی جارہی ہے اقرباپروری عروج پر ہیں گریڈ 1 سے 16 تک غیر قانونی بھرتی کی جارہی ہیں وائس چانسلر لاکھوں کا ٹی ڈی اے وصول کرچکاہے ۔ ملازمین اور خاص کر چھوٹے ملازمین کو ہراساں کیا جا رہا ہے بوگس انکوائریاں بناکر ملازمین کا دفتری ریکارڈ خراب کیا جا رہا ہے اساتذہ کی تنزلی کی جارہی ہے تنخواہوں میں کٹوتی ہو رہی ہے حکومت کی جانب سے اضافہ شدہ تنخواہ ادا نہیں کی جارہی عدالتوں کے فیصلوں کو مذاق بنایا گیا ہے یونیورسٹی ایکٹ اور اسٹیچوٹس کی خلاف ورزی کی جارہی ہے طلبہ کو اساتذہ کی کردار کشی پر اکسانے کے لئے انہیں بلیک میل کیا جا رہا ہے یہ تمام عوامل اس درسگاہ کو تباہی کے دہانے پر لا چکی ہیں انہوں نے کہا کہ مقامی انتظامیہ کے بعض افسران اور رکن قومی اسمبلی کی جانب سے یونیورسٹی کے وائس چانسلر ڈاکٹر محمد سرور رجسٹرار دل نواز خان کے حق میں بیانات دینے پر سخت افسوس کا اظہار کیا اور اس کو کرپٹ اور علم دشمن عناصر کی درحقیقت حوصلہ افزائی سے تعبیر کیا ۔

مزید : کراچی صفحہ اول