شہباز شریف کی حراست کے خلاف ن لیگ نے رابطہ نہیں کیا، الیکشن کمیشن

شہباز شریف کی حراست کے خلاف ن لیگ نے رابطہ نہیں کیا، الیکشن کمیشن
شہباز شریف کی حراست کے خلاف ن لیگ نے رابطہ نہیں کیا، الیکشن کمیشن

  

اسلام آباد (ویب ڈیسک) مسلم لیگ ن کی جانب سے شہباز شریف کی رہائی کے لیے چیئرمین نیب کو ہدایات جاری کرنے سے متعلق الیکشن کمیشن کو لکھے گئے خط کا معاملہ مشکوک ہوگیا، ترجمان ا لیکشن کمیشن نے خط موصول ہونے کی تصدیق سے انکار کرتے ہوئے کہا ہے کہ مسلم لیگ ن کے چیئرمین راجہ ظفر الحق کی جانب سے کوئی خط تاحال موصول نہیں ہوا۔

روزنامہ خبریں کے مطابق ترجمان الیکشن کمیشن الطاف خان نے کہا کہ میان شہباز شریف کی نیب حراست کے خلاف مسلم لیگ ن کی جانب سے الیکشن کمیشن سے تاحال کوئی رابطہ نہیں کیا گیا اور نہ ہی کوئی خط موصول ہوا ہے، جب خط ملے گا تو الیکشن کمیشن اس پر کو ئی ردعمل دے گا، راجہ ظفر الحق کی جانب سے الیکنش کمیشن کو لکھے گئے خط بارے وہ خو دہی بتاسکتے ہیں۔ خط کن ذرائع سے اور کب بھجوایا گیا۔

یاد رہے کہ نیب کے لاہور آفس میں پانچ اکتوبر کو پیشی پر مسلم لیگ ن کے صدر شہباز شریف کو آشیانہ ہاﺅسنگ سکیم کیس میں گرفتار کرلیا گیا جس پر مسلم لیگ ن کے چیئرمین راجہ ظفر الحق نے الیکشن کمیشن کو فوری خط لکھتے ہوئے ان کی رہائی کے لئے نیب کو ہدایت جاری کرنے کا مطالبہ کیا گیا۔ الیکشن کمیشن کو لکھے گئے خط میں کہا گیا تھا کہ الیکشن کمیشن شہباز شریف کی 14 اکتوبر کو ہونے والے ضمنی انتخابات سے قبل گرفتاری کا فوری نوٹس لیتے ہوئے نیب کو ان کی رہائشی کا حکم جاری کرے، ضمنی الیکشن سے قبل قائد حزب اختلاف کی گرفتاری پری پول دھاندلی ہے، اگر شہباز شریف کو رہا نہ کیا گیا تو مسلم لیگ ن شدید احتجاج کرے گی۔

مزید : علاقائی /اسلام آباد