صحافیوں کو درپیش مسائل کا حل قانون سازی سے ہی ممکن،عارف علوی

صحافیوں کو درپیش مسائل کا حل قانون سازی سے ہی ممکن،عارف علوی

  



اسلام آباد(آئی این پی)صدر مملکت ڈاکٹر عارف علوی نے کہا ہے کہ صحافیوں کو درپیش مسائل کا حل قانون سازی سے ہی ممکن ہے،صحافیوں کی لائف اور ہیلتھ انشورنس کیلئے قانون سازی ضروری ہے، پرنٹ میڈیا کے ساتھ الیکٹرانک میڈیا کو بھی قوانین میں شامل کیا جائے،میڈیا کے پاس ترازو ہے وہ خبر کا منصفانہ حجم کرکے اس کے مطابق اسے جگہ دے،سوشل میڈیا پر خبریں تیزی سے آتی ہیں لیکن اس پر کوئی چھننی نہیں،سوشل میڈیا سے لوگ پریشان ہونا شروع ہو گئے ہیں،ڈیم فنڈ کی رقم کے بارے غلط خبر چلنے کے بعد وضاحت ہوگئی لیکن عوامی شک و شبہ ختم نہیں ہوا۔وہ جمعرات کو پارلیمانی رپورٹرز ایسوسی ایشن (پی آر اے) کے وفد سے ملاقات میں گفتگو کر رہے تھے۔ بہزادسلیمی نے صدرمملکت عارف علوی کو صحافیوں کو درپیش مسائل سے آگاہ کیا۔ صدرنے مسائل کے حل کے لیے اپنا کردار ادا کرنے کی یقین دہانی کروائی اورسیکرٹری اطلاعات زاہدہ پروین کو میڈیا سے متعلق زیر التواء قانون سازی کا عمل تیز کرنے کی ہدایت کی۔صدر عارف علوی نے میڈیا کے مسائل کے حل کے لیے خصوصی ٹاسک فورس کے قیام سے متعلق پی آراے کی تجویز سے اصولی اتفاق کیا۔ انہوں نے کہا کہ امریکی انتخابات سے واضح ہوا کہ انتخابات پر سوشل میڈیا کے بڑے اثرات ہوتے ہیں،سوشل میڈیا سے لوگ پریشان ہونا شروع ہو گئے ہیں،بھارتی انتخابات میں سوشل میڈیا پر80فیصد خبریں جھوٹی تھیں،مس انفارمیشن اور ڈس انفارمیشن میں واضح فرق ہے، سوچے سمجھے منصوبہ کے تحت غلط خبر دینا ڈس انفارمیشن کے زمرے میں آتی ہے، الیکٹرانک میڈیا میں خبر دینے میں سبقت کی دوڑ کے باعث نقصان ہوتا ہے۔

صدر مملکت

مزید : پشاورصفحہ آخر


loading...