بجلی کی قیمت میں اضافہ، ایمبرائیڈری صنعت بند ہو جائیگی،راناعبدالغفور

  بجلی کی قیمت میں اضافہ، ایمبرائیڈری صنعت بند ہو جائیگی،راناعبدالغفور

  



فیصل آباد(سپیشل رپورٹر)ایف بی آر کی بے جا ٹیکسز کا ابھی تک مسئلہ حل نہ ہو سکا تھا کہ رہی سہی کسر بجلی کے موجودہ بلوں نے نکال دی ہے پہلے ہی فیصل آباد سمیت دیگر شہروں میں ایمبرائیڈری کے 70فیصد یونٹس بند پڑے ہیں اگر صنعتکاروں کے مسائل فوری طور پر حل نہ کئے گئے تو اس صورتحال میں باقی 30فیصد یونٹس بھی مکمل طور پر بند ہو جائیں گے جبکہ پراسیسنگ اور ایمبرائیڈری یونٹس تقریباً 4سے 5لاکھ مزدور بے روزگار ہو چکے ہیں ان خیالات کا اظہار آل پاکستان ایمبرائیڈری ایسوسی ایشن کے صدر رانا عبدالغفور نے ”پاکستان“ سے بات چیت کرتے ہوئے کیا انہوں نے بتایا کہ پہلے بجلی کا فی یونٹ 15روپے تھا جو بڑھتے بڑھتے 24روپے تک پہنچ گیا۔ پرائم منسٹر ریلیف فنڈ سے 23فیصد سبسڈی دی جاتی تھی جو اچانک بند کرتے ہوئے کوارٹر ایڈجسٹمنٹ اور فیول ایڈجسٹمنٹ بڑھانے کے بعد موجودہ بجلی کا ریٹ 40سے 50فیصد تک بڑھا دیا گیا ہے۔ جبکہ پاور لومز مالکان‘ ٹیکسٹائل سیکٹر کی طرف سے فیسکو کے 50فیصد بڑھا ئے گئے  ٹیرف پر عدالت سے حکم امتناعی بھی حاصل کیا ہوا تھا جس کے بعد فیسکو حکام کی طرف سے کوارٹر ایڈجسٹمنٹ‘ فیول ایڈجسٹمنٹ کی مد میں تقریباً25فیصد ٹیرف میں اضافہ کیا گیا اور پرائم منسٹر ریلیف فنڈ بند کرنے سے مجموعی طور پر صنعتکاروں کو 40سے 50فیصد اضافی ٹیرف سے بل موصول ہوا ہیں۔ انہوں نے بتاایا کہ فیصل آباد اور لاہور میں پراسیسنگ اور ایمبرائیڈری یونٹس بند ہونے سے تقریباً 6سے 7لاکھ مزدور بے روزگار ہو چکے ہیں اور اگر حکومت نے اپنی موجودہ روش تبدیل نہ کی تو فیصل آباد سمیت لاہور‘ کراچی‘ راولپنڈی‘ حافظ آباد‘گوجرانوالہ‘ سیالکوٹ اور ملتان سمیت دیگر شہروں میں یونٹس بند ہونے کے باعث 25سے 30لاکھ مزدور بے روزگار ہو جائیں گے اس لئے حکومت کو چاہیے کہ وہ پوری سنجیدگی کے ساتھ صنعتکاروں کو ایک بیچ پر بٹھا کر بہ احسن طریقہ سے مسائل حل کرے تاکہ ملک کی دن بدن گرتی ہوئی معاشی صورتحال بہتر ہو سکے۔

رانا عبدالغفور

مزید : صفحہ آخر