خیبر پختونخوا، بلوچستان،پنجاب میں گرفتاری کا اندیشہ،فضل الرحمن کا سندھ سے آزادی مارچ کی قیادت کا فیصلہ

خیبر پختونخوا، بلوچستان،پنجاب میں گرفتاری کا اندیشہ،فضل الرحمن کا سندھ سے ...

  



پشاور(مانیٹرنگ ڈیسک) مولانا فضل الرحمن نے 27 اکتوبر کو سکھر سے آزادی مارچ قافلے کی قیادت کا فیصلہ کرلیا، اسلام آباد میں طویل دھرنے کا امکان نہیں۔نجی ٹی وی ذرائع کے مطابق پنجاب، خیبر پختونخوااور بلوچستان میں تحریک انصاف کی حکومتیں ہونے کی وجہ سے مولانا فضل الرحمن کو مارچ کے آغاز میں ہی گرفتار کیا جا سکتا ہے جس سے مارچ متاثر ہوگا۔سندھ میں پیپلز پارٹی کی حکومت ہونے سے جے یو آئی ف کے سربراہ کی گرفتاری کا کوئی امکان نہیں بلکہ سندھ حکومت سہولیات بھی فراہم کرے گی اور یوں پنجاب میں داخل ہونے تک آزادی مارچ کا ماحول بن چکا ہوگا۔ ذرائع کا یہ بھی کہنا ہے کہ اسلام آباد پہنچنے کے بعد مولانا فضل الرحمن کا کسی طویل دھرنے کا امکان نہیں۔مولانا کا کہنا ہے کہ وہ عمران خان کی طرح 126 دن کے دھرنے کے قائل نہیں، اسلام آباد پہنچ کر آئندہ کی حکمت عملی کا اعلان خود کروں گا، اگر مارچ کا راستہ رو کنے کی کوشش کی گئی تو احتجاج کا دائرہ کار پورے ملک تک پھیلا دیا جائے گا۔

 گرفتاری کا اندیشہ

مزید : صفحہ اول