اگر ہم سے فیصلے میں غلطی ہے تو اسے ضرور درست کریں گے،سپریم کورٹ نے 5 قتل کے مجرم کی سزا بڑھانے کیلئے دائر نظرثانی درخواست خارج کردی

اگر ہم سے فیصلے میں غلطی ہے تو اسے ضرور درست کریں گے،سپریم کورٹ نے 5 قتل کے ...
اگر ہم سے فیصلے میں غلطی ہے تو اسے ضرور درست کریں گے،سپریم کورٹ نے 5 قتل کے مجرم کی سزا بڑھانے کیلئے دائر نظرثانی درخواست خارج کردی

  



اسلام آباد(ڈیلی پاکستان آن لائن)سپریم کورٹ میں 5 افراد کے قاتل کی سزائے موت کو عمر قید میں تبدیل کرنے کیخلاف نظرثانی اپیل پر سماعت ہوئی ،عدالت نے ملزم محمد یار کی سزابڑھانے کیلئے دائر نظرثانی درخواست خارج کردی۔چیف جسٹس پاکستان نے کہا کہ اگر ہم سے فیصلے میں غلطی ہے تو اسے ضروردر ست کریں گے ۔

تفصیلات کے مطابق سپریم کورٹ میں 5 افراد کے قاتل کی سزائے موت کو عمر قید میں تبدیل کرنے کیخلاف نظرثانی اپیل پر سماعت ہوئی ،چیف جسٹس آصف سعید کھوسہ کی سربراہی میں بنچ نے سماعت ہوئی ،وکیل درخواست گزار نے دلائل دیتے ہوئے کہا کہ سپریم کورٹ نے 5 قتل کے مجرم کی سزاعمر قید میں تبدیل کی ،سپریم کورٹ کافیصلہ درست نہیں تھاملزم کو سزائے موت دی جائے ،چیف جسٹس پاکستان نے کہا کہ اگر ہم سے فیصلے میں غلطی ہے تو اسے ضروردر ست کریں گے ،وکیل اللہ بخش گوندل نے کہا کہ واقعے میں 3 بچے بھی قتل ہوئے ۔

چیف جسٹس پاکستان نے کہا کہ اس کیس میں موٹیو ثابت نہیں ہوا،وکیل نے کہا کہ عدالت کو معصوم بچوں کے قتل کو مدنظر رکھنا چاہئے تھا ،چیف جسٹس نے کہا کہ ہم نے ملزم کو بری تو نہیں کیا،وکیل نے کہا کہ ملزم کو بری نہیں کیا لیکن سزائے موت او عمر قید میں کیا فرق ہے ،عدالت نے کہا کہ آپ نے ایف آئی آر میں خودلکھا کہ ملزم نے اشتعال میں آکر قتل کئے ،وکیل نے کہا کہ اشتعال کا مطلب یہ نہیں کہ معصوم بچوں کو بھی قتل کر دیا جائے،ایک بے گناہ انسان کا قتل پوری انسانیت کا قتل ہے ،کسی بچے سے زیادتی ہو جائے توعدالت ملزم کو ضمانت تک نہیں دیتی ،یہاں تو تین معصوم بچے قتل کر دیئے گئے ،چیف جسٹس پاکستان نے کہا کہ دنیا میں پالیسی کے تحت مجرموں کی سزائے موت ختم کی جا رہی ہے ،وکیل نے کہا کہ ہمارے ملک میں منشیات اورقتل کرنے والے مجرموں کو چھوڑ دیا جاتا ہے،اگر ایسے ملزمان کو چھوڑا جاتا رہا توایسے واقعات کیسے کم ہوں گے ۔

چیف جسٹس پاکستان نے کہا کہ ہم نے قانون کے مطابق فیصلے کرنے ہیں ،اگر پارلیمنٹ قانون میں تبدیلی کرے تو اس کے مطابق فیصلہ کریں گے،وکیل نے کہا کہ میں اس پارلیمنٹ کو نہیں مانتا،چیف جسٹس نے کہا کہ آپ جذباتی ہو رہے ہیں ،ہم پارلیمنٹ کا بہت احترام کرتے ہیں،عدالت نے ملزم محمد یار کی سزابڑھانے کیلئے دائر نظرثانی درخواست خارج کردی۔

مزید : قومی /علاقائی /اسلام آباد


loading...