عمران فاروق قتل کیس، برطانوی حکومت سے ملنے والے شواہد عدالت میں پیش

عمران فاروق قتل کیس، برطانوی حکومت سے ملنے والے شواہد عدالت میں پیش
عمران فاروق قتل کیس، برطانوی حکومت سے ملنے والے شواہد عدالت میں پیش

  



اسلام آباد(ڈیلی پاکستان آن لائن) ڈاکٹر عمران فاروق قتل کیس میں برطانوی حکومت سے حاصل کئے گئے شواہد انسداد دہشت گردی کی عدالت میں پیش کر دیئے گئے، جن میں قتل کی ویڈیواور آلہ قتل شامل ہیں۔تفصیلات کے مطابق اسلام آباد کی انسداد دہشت گردی عدالت کے جج شاہ رخ ارجمند نے ڈاکٹر عمران فاروق قتل کیس کی سماعت کی، سماعت میں برطانوی حکومت سے ملنے والے شواہد اسلام آباد کی انسداددہشت گردی عدالت میں پیش کئے گئے، جن میں عمران فاروق قتل کی ویڈیو فوٹیج اور آلہ قتل کے ساتھ فرانزک رپورٹس شامل ہیں۔

پراسکیوٹر ایف آئی اے نے عدالت کو بتایا کہ ضمنی چالان کے مطابق 23 گواہان بیان قلمبند کروانا چاہتے ہیں۔ تین گواہان ذاتی حیثیت میں جبکہ 20 گواہان ویڈیو لنک پر بیان قلمبند کروائیں گے۔سرکاری وکیل کے بیان پر عدالت نے تین گواہوں کوذاتی حیثیت میں بیان قلمبند کرانے کےلئے طلب کرلیا، فاضل جج نے کہا میٹروپولیٹن پولیس لندن کے تین افسران چھ نومبر کو بیان قلمبند کرائیں۔بعد ازاں فاضل جج شاہ رخ ارجمند نے کیس کی مزید سماعت چھ نومبر تک ملتوی کردی۔

مزید : قومی /علاقائی /اسلام آباد


loading...