نوازشریف نے یوسف عباس اورمریم نوازکی شراکت داری سے 410 ملین کی منی لانڈرنگ کی ،چودھری شوگر ملز کیس سے متعلق نیب کی رپورٹ منظرعام پر آ گئی

نوازشریف نے یوسف عباس اورمریم نوازکی شراکت داری سے 410 ملین کی منی لانڈرنگ کی ...
نوازشریف نے یوسف عباس اورمریم نوازکی شراکت داری سے 410 ملین کی منی لانڈرنگ کی ،چودھری شوگر ملز کیس سے متعلق نیب کی رپورٹ منظرعام پر آ گئی

  



لاہور(ڈیلی پاکستان آن لائن)چودھری شوگر ملزکیس سے متعلق نیب کی رپورٹ منظرعام پر آ گئی ،رپورٹ کے مطابق سابق وزیراعظم نوازشریف نے یوسف عباس اورمریم نوازکی شراکت داری سے 410 ملین کی منی لانڈرنگ کی ،نجی ٹی وی اے آر وائی نیوز کے مطابق نیب رپورٹ میں کہاگیا ہے کہ ملزمان نے جعلی 11 ملین کے شیئرزغیر ملکی نصیر اللہ کو منتقلی کا دعویٰ کیا،غیر ملکی کوٹرانسفرکئے گئے درحقیقت نوازشریف کو2014 میں واپس کئے گئے تھے ،رپورٹ میں کہا گیا ہے کہ چودھری وشمیم شوگر ملز میں 1992 سے 2016 تک دو ہزار ملین کی انویسمنٹ کی گئی ،نوازشریف نے ایک کروڑ55 لاکھ20 ہزارڈالر کا قرض شوگر ملز میں ظاہر کیا ۔

رپورٹ میں انکشاف کیا گیا ہے کہ نوازشریف نے قرضہ 1992 میں آف شور کمپنی سے لیا تھا،نوازشریف نے جس کمپنی سے قرض لیا اسکا اصل مالک ظاہر نہیں کیا گیا۔رپورٹ میں مزید کہا گیا ہے کہ چودھری شوگر ملز کے آغاز کیلئے شریف فیملی نے اپنی 9کمپنیوں سے قرض لیا،شریف فیملی نے 20 کروڑ95 لاکھ کا قرض9 کمپنیوں سے لیا ،چودھری شوگر ملز کیلئے ایک کروڑ53 لاکھ ڈالر کاقرض بھی حاصل کیا گیا ،نیب رپورٹ میں کہا گیا ہے کہ نوازشریف 1992 میں 43 ملین شیئر کے مالک تھے ،نیب نے کہا کہ نوازشریف کے پاس اتنے شیئر 1992 میں کہاں آئے یہ نہیں بتایا گیا،نوازشریف کے جب اثاثے بڑھے اس وقت پنجاب کے وزیراعلیٰ وزیرخزانہ بھی رہے ،رپورٹ میں مزید کہا گیا ہے کہ نوازشریف نے نیب مشترکہ تحقیقاتی ٹیم کو کسی سوال کا جواب نہیں دیا ۔

مزید : قومی /علاقائی /پنجاب /لاہور


loading...