جنوبی پنجاب، بینظیر انکم سپورٹ پروگرام میں کروڑوں کا فراڈ، 4ڈاکو گرفتار

جنوبی پنجاب، بینظیر انکم سپورٹ پروگرام میں کروڑوں کا فراڈ، 4ڈاکو گرفتار

  

 ملتان (وقا ئع نگار) جنوبی پنجاب میں بے نظیر انکم سپورٹ پروگرام میں کروڑوں روپے کے غبن کی تحقیقات میں اہم پیشرفت ہوئی ہے۔جنوبی پنجاب کے  ریٹیلرز کا نجی بینک کے عملے کے ساتھ ملی بھگت کرکے کروڑوں روپے غبن کرنے کے شواہد مل گئے۔ایف آئی اے سائبر کرائم ونگ نے غبن میں ملوث 4 افراد کو حراست میں لے لیا۔اور تفتیش کا دائرہ کار بڑھا دیا ہے۔جبکہ گرفتار ہونے والوں میں ریٹیلر ماجد اصغر،فرنچائز (بقیہ نمبر39صفحہ 6پر)

مالک وقار،بینک منیجر عمر تصدق اور ریٹیلر حارث نذیر کے نام  شامل ہیں۔واضح رہے ایف آئی اے حکام کے مطابق حکومت کی جانب سے نجی بینک کو بے نظیر انکم سپورٹ پروگرام کی رقم منتقل کی جاتی ہے۔نجی بینک کی جانب سے علاقائی سطح پر ریٹیلرز رقوم  فہرست میں شامل افراد کو تقسیم کرتے ہیں۔اس حوالے سے مختلف شکایت کر ایف آئی اے سائبر کرائم ونگ ملتان کی ٹیم نے جنوبی پنجاب کے 32 ریٹیلرز اور نجی بینک کے عملے سے تحقیقات شروع کردی ہیں۔یاد رہے کچھ عرصہ قبل بی آئی ایس پی کے ڈائریکٹر کی جانب سے صادق آباد میں ریٹیلر عمران نے 20 لاکھ غبن ہونے پر  خود کشی کرلی تھی۔جس کی ایف آئی اے کو شکایات کی گئی۔

تحقیقات

مزید :

ملتان صفحہ آخر -