خانپور: اراضی پر قبضہ کی مبینہ کوشش‘ مقدمہ  درج کرانے کیلئے دائر رٹ پٹیشن خارج

 خانپور: اراضی پر قبضہ کی مبینہ کوشش‘ مقدمہ  درج کرانے کیلئے دائر رٹ پٹیشن ...

  

 خان پور(نمائندہ پاکستان)ایڈیشنل ڈسٹرکٹ اینڈ سیشن جج محمداختر بھٹی نے بھتہ خوری کی غرض سے باہمی سازش کے تحت مسلح افراد کی طرف سے آتشیں اسلحہ کے ساتھ(بقیہ نمبر15صفحہ 6پر)

 زبردستی زرعی اراضی پر قبضہ کرنے کی مبینہ کوشش کے خلاف مقدمہ درج کرانے کے لئے دائر رٹ پٹیشن حقائق پر مبنی نہ ہونے کی بنا پر خارج کر دی ہے اور اپنے فیصلہ میں کہا ہے کہ زمین کے تنازعہ کے سول نوعیت کے معاملہ کو فوجداری جرم بنانے کے لئے پولیس تحقیقات کے مطابق فرضی وقوعہ بنایا گیا ہے تفصیلات کے مطابق چک نمبر 7پی کے رہائشی عبدالغفور ولد اللہ دتہ نے ایڈیشنل ڈسٹرکٹ اینڈ سیشن جج خان پور میں درخواست دائر کی تھی جس میں کہا گیا کہ اس نے چک نمبر 7پی کے رہائشی محمد پرویز اختر ولد محمد اقبال اور اس کے بھائیوں سے 66کنال 14مرلے زرعی زمین خرید کی تھی اس کے لئے 20لاکھ روپے بطور ایڈوانس ادا کر کے زمین کا قبضہ بھی لے لیا تھا اور بقیہ رقم اقرا رنامہ بیع سے دو ماہ کے اندر ادا کر کے انتقال لینا تھا تاہم بعد ازاں محمد پرویز اختر اور اس کے بھائیوں کی نیت خراب ہو گئی اور زمین کا انتقال دینے کے لئے لعیت و لعل سے کام لینے لگے درخواست میں کہا گیا ہے کہ محمد پرویزاختر اور اس کے ساتھیوں محمد رفیق عرف ملک پھکی، محمد اسلم عرف پنوں اور محمد سرور عرف پھلو جو قبضہ گروپ سے تعلق رکھتے ہیں اور بھتہ خوری کرتے ہیں اور اب بھی مجھ سے دس لاکھ روپے بھتہ خوری دینے کے لئے مطالبہ کر رہے ہیں اور دھمکیاں دیتے ہیں کہ بھتہ کی ادائیگی نہ کی گئی تو وہ مدعی کی زمین پر قبضہ کر لیں گے رٹ پٹیشن میں کہا گیا ہے گزشتہ دنوں 6جولائی کو ملزمان محمد اسلم اور محمد رفیق نے اسلحہ سے لیس ہو کر میری زمین پر قبضہ کرنے کی کوشش کی اور مزاحمت کرنے پر اسلحہ لہراتے اور دہشت گردی کرتے ہوئے فرار ہو گئے۔ مدعی کے مطابق اس نے وقوعہ کی رپورٹ تھانہ صدر خان پور میں درج کرانے کے لئے درخواست دی مگر ایس ایچ او نے ملزمان کی جانب سے وقوعہ کو تسلیم کرنے کے باوجود کوئی کارروائی نہ کی جس کی وجہ سے ایس ایچ او کے خلاف انصاف کے حصول اور ملزمان کے خلاف مقدمہ درج کرنے کے احکامات کے لئے رٹ پٹیشن دائر کی گئی ہے تاہم ایڈیشنل ڈسٹرکٹ اینڈ سیشن جج خان پور نے پولیس کی تحقیقات کی جانب سے وقوعہ کی تصدیق نہ ہونے اوردرخواست حقائق پر مبنی نہ ہونے پر رٹ پٹیشن خارج کرنے کے احکامات جاری کر دیئے ہیں۔

خارج

مزید :

ملتان صفحہ آخر -