قیام امن کیلئے قبائلی عوام کی قربانیاں ناقابل فراموش ہیں 

  قیام امن کیلئے قبائلی عوام کی قربانیاں ناقابل فراموش ہیں 

  

ٹانک(نمائندہ خصوصی)ٹانک آپریشن راہ نجات کے دوران ملکی سالمیت کی خاطر بیٹنی قبائل سے تعلق رکھنے والے 55 بیگھر خاندانوں کی دوبارا پنے گھروں میں آباد کاری کے لئیے 11 کور ہیڈ کوارٹر اور ایف سی ہیڈکوار۱ٹر ساؤتھ کے تعاون سے  تیسری قسط تقسیم کر دی گئی اس حوالے سے منزئی قلعہ میں ایک تقریب کا انعقاد کیا گیا تھا تقریب  میں سیکٹر کمانڈر ساؤتھ،کمانڈیٹ گومل سکاؤٹس،بیٹنی قبائل کے مشران اور متاثرہ 55خاندانوں سمیت فوج اور ایف سی کے افسران شریک تھے تقریب کے موقع پر سکیٹر کمانڈر ساؤتھ کا کہنا تھاکہ آپریشن راہ نجات کے دوران بیٹنی قبائل سے تعلق رکھنے والے 55خاندانوں نے ملکی بقاء کی خاطر سور غر سے کڑی وام اور ملک کے دیگر علاقوں کی طرف نقل مکانی کی  تھی پاک فوج ان کی دی ہوئی ان قربانیوں کو قدر کی نگاہ سے دیکھتی ہے انہوں نے کہا پاکستان کی بقاء کے لئیے جن قوموں نے قربانی دی ہے پاک فوج اور ایف سی ان قوموں کو کبھی بھی تنہا نہیں چھوڑے گی اپنے گھروں کو چھوڑ  کرنقل مکانی کرنا بہت بڑی قربانی کے مترادف ہے سکیٹر کمانڈر ساؤتھ کا مذید کہنا تھا کہ پاکستان ہمارے اسلاف کی دی ہوئی قربانیوں کی نشانی ہے جس کی ترقی اور خوشحالی کے لئیے ہم سب کو ملکر کام کرنا ہو گا جنڈولہ کی ترقی اور خوشحالی کے لئے پاک فوج سول انتظامیہ کے ساتھ ملکر ترقیاتی کاموں کا جال بچھائے گی تاکہ یہاں پر شہریوں کو روزگار کے مواقع میسر ہوں جنڈولہ میں تعلیمی سرگرمیوں کے فروغ کے لئے خصوصی توجہ دی جائیگی تاکہ یہاں کے بچے بھی پڑھ لکھ کر ملکی ترقی میں اپنا کردار ادا کر سکیں اور ملک و قوم کا نام روشن کر سکیں انہوں کہا کہ جنڈولہ کو پہلے کی طرح تجارت کا مرکز بنانے کے لئیے عملی اقدامات اٹھائے جائیں گے علاقہ میں پائیدار امن کے لئے یہاں کی عوام سیکورٹی فورسز کے ساتھ تعاون کریں تاکہ علاقہ میں خوشحالی آسکے اس موقع پر بیٹنی قبائل کا مشر مولانا ہفتے خان نے کہا کہ ہم اپنے پاک فوج پر فخر کرتے  ھے جو اپنے انے والے کل کو پاکستان پر قربان کرتے ہیں۔بیٹنی قوم پہلے بھی پاک فوج کے شانہ بشانہ کھڑی تھی اور آئندہ بھی رہے گی آخر میں متاثرین نے ایف سی ساؤتھ کا شکریہ کیا

مزید :

پشاورصفحہ آخر -