مولانا ڈاکٹر عادل خان کے قتل کی سی سی ٹی وی ویڈیو سامنے آگئی

مولانا ڈاکٹر عادل خان کے قتل کی سی سی ٹی وی ویڈیو سامنے آگئی
مولانا ڈاکٹر عادل خان کے قتل کی سی سی ٹی وی ویڈیو سامنے آگئی
کیپشن:    سورس:   File Photo

  

کراچی (ویب ڈیسک) کراچی میں فائرنگ سے ڈرائیور سمیت جاں بحق ہونے والے جامعہ فاروقیہ کے مہتمم مولانا ڈاکٹر عادل خان کے قتل کے واقعے کی سی سی ٹی وی ویڈیو سامنے آگئی ہے۔

انچارج کاؤنٹر ٹیررازم ڈپارٹمنٹ (سی ٹی ڈی) راجہ عمر خطاب کے مطابق فوٹیج میں موٹرسائیکل سوار 3 ملزمان نظرآرہے ہیں جب کہ بیک اپ پر اور بھی لوگ ہوسکتے ہیں،انچارج سی ٹی ڈی راجہ عمر خطاب کے مطابق یہ فرقہ واریت کی سازش ہے۔

دوسری جانب پولیس نے واقعے کی تحقیقات شروع کردی ہیں اور فوری تفصیلات کے مطابق مولانا عادل کی گاڑی شاہ فیصل میں مٹھائی کی دکان پر رکی تھی اور جیسے ہی گاڑی رکی موٹرسائیکل پرسوار ملزمان اتر کر آئے اور گاڑی پر فائرنگ کردی،فائرنگ کے نتیجے میں مولا نا عادل خان اور ان کا ڈرائیور جاں بحق ہوگیا۔

پولیس حکام کاکہنا ہے کہ جس گاڑی پرفائرنگ ہوئی اس میں 3 لوگ موجود تھے جن میں مولانا عادل، مقصود اور عمیر سوار تھے،گاڑی رکنے پر عمیر شمع شاپنگ سینٹرپر مٹھائی کی دکان سے مٹھائی لینے گیا، اس دوران موٹر سائیکل سوار حملہ آوروں نے ٹارگٹ کرکے فائرنگ کی۔

پولیس کے مطابق ایسا لگتاہے کہ دہشت گرد ان کا پیچھا کررہے تھے،موقعے سے نائن ایم ایم کے 5 خول ملے ہیں، موٹرسائیکل پر3حملہ آور سوار تھے اور حملہ آوروں نے موٹرسائیکل مخالف سمت میں کھڑی کی ہوئی تھی۔

وزیر اعظم عمران خان نے مولانا عادل کی ٹارگٹ کلنگ کی مذمت کی ہے۔

اپنے بیان میں وزیراعظم عمران خان نے کہا کہ بھارت پاکستان میں علماءکو قتل کرا کر شیعہ سنی فرقہ وارانہ تنازع پیدا کرانا چاہتا ہے۔

انہوں نے کہا کہ یہ میری حکومت جانتی ہے اور میں متعدد بار ٹی وی پر کہہ چکا ہوں، گزشتہ 3 ماہ کے دوران بھارت نے سنی اور شیعہ علماءکو قتل کرنے کی متعدد کوششیں کیں تاکہ پاکستان میں فرقہ وارانہ فسادات شروع ہوجائیں۔

وزیراعلیٰ سندھ مراد علی شاہ نے مولانا عادل کے قاتلوں کو فوری طورپرگرفتار کرنے کی ہدایت کرتے ہوئے کہا ہےکہ کچھ شدت پسند شہر کا امن خراب کرنا چاہتے ہیں۔

مزید :

علاقائی -سندھ -کراچی -